Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس پارٹی کا عنقریب اخبار و ٹیلی ویژن چینل

کانگریس پارٹی کا عنقریب اخبار و ٹیلی ویژن چینل

2019ء عام انتخابات میں 90 نشستوں پر کامیابی : صدر تلنگانہ پی سی سی اتم کمار ریڈی کا ادعا
حیدرآباد ۔ 9 ستمبر (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی نے عنقریب کانگریس پارٹی کا اخبار اور ٹیلیویژن چینل شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس پارٹی 2019ء کے عام انتخابات میں 90 اسمبلی حلقوں پر کامیابی حاصل کرے گی۔ شمس آباد میں پارٹی قائدین کیلئے اہتمام کیا گیا۔ تربیتی کیمپ سے خطاب کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے کہاکہ 2014ء کے عام انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد چیف منسٹر کے سی آر نے 2 مقامی ٹیلیویژنس پر امتناع عائد کردیا تھا، جس سے گھبرا کر دوسرے میڈیا ہاؤز میں چیف منسٹر کے سی آر کے جھوٹ بولنے پر بھی اخبار کے پہلے صفحے پر بیانر آئیٹم کی شکل میں نیوز شائع کررہے ہیں۔ ریاست تلنگانہ میں لوٹ کھسوٹ کرتے ہوئے حکومت میڈیا پر اثرانداز ہونے کی کوشش کررہی ہے۔ اس کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے ہی کانگریس پارٹی اپنا اخبار اور چینل شروع کررہی ہے جس کی تیاریوں کا بھی آغاز کردیا گیا ہے۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے حکومت کے دھمکیوں کی پرواہ کئے بغیر عوامی مسائل کو اور حکومت کے غلط فیصلوں کو سوشیل میڈیا پر پیش کرنے کیلئے اسی پلیٹ فارم کا بھرپور استعمال کرنے پر زور دیا اور کہا کہ کانگریس پارٹی ریاست میں اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کررہی ہے۔ ہر عوامی مسئلہ کو موضوع بحث بناتے ہوئے حکومت سے رجوع کررہی ہے۔ ریاست میں دلتوں، قبائیلوں، پسماندہ طبقات اور اقلیتوں کا کوئی تحفظ نہیں ہے۔ آئے دن ان پر حملے کئے جارہے ہیں۔ ان حملوں کے خلاف کانگریس پارٹی اپنے احتجاج میں شدت پیدا کررہی ہے۔ عوامی مسائل پر کبھی کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ کانگریس پارٹی بہت جلد بس یاترا کا آغاز کرے گی۔ یہ بس یاترا ریاست کے تمام اسمبلی حلقوں کا احاطہ کرے گی۔ اتم کمار ریڈی نے کانگریس کیڈر کو مشورہ دیا کہ وہ حکمران ٹی آر ایس کے دھمکیوں سے ہرگز خوفزدہ نہ ہو اقتدار حاصل کرنے کے بعد کانگریس پارٹی سود سمیت تمام حساب چکتا کرے گی۔ ٹی آر ایس کے دورحکومت میں سنہرا تلنگانہ بنانے کا وعدہ کیا تھا مگر کے سی آر خاندان کے صرف 4 ارکان کیلئے ہی اچھے دن آئے ہیں۔ کے سی آر کی جانب سے جھوٹ و فریب کا سہارا لینے سے کانگریس کو 2014ء کے انتخابات میں شکست ہوئی تھی۔ تاہم کانگریس پارٹی 2019ء کے عام انتخابات میں 90 اسمبلی حلقوں پر کامیابی حاصل کرے گی۔ ساڑے تین سال گذرنے کے باوجود چیف منسٹر نے ملازمتیں فراہم کرنے کے وعدے کو پورا نہیں کیا۔ زرعی شعبہ بحران کا شکار ہوچکا ہے۔ کسانوں سے متعلق کسان کمیٹیوں میں تمام ٹی آر ایس کے حامی ہی شامل رہیں گے۔ ڈیزائن میں تبدیلی کے نام پر بڑے پیمانے کی بدعنوانیاں کی جارہی ہیں۔ کانگریس پارٹی پراجکٹس کے خلاف نہیں ہے بلکہ کے سی آر کی لوٹ کھسوٹ کے خلاف ہے۔

TOPPOPULARRECENT