Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / کانگریس پارٹی کی چلو اسمبلی ریالی کامیاب : اتم کمار ریڈی

کانگریس پارٹی کی چلو اسمبلی ریالی کامیاب : اتم کمار ریڈی

مختلف مقامات پر احتجاج ، قائدین گرفتار و نظر بند ، چیف منسٹر کا پتلا نذر آتش
حیدرآباد ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : چلو اسمبلی احتجاجی ریالی منظم کرنے والے کانگریس قائدین اور کارکنوں کو ریاست کے مختلف مقامات پر گرفتار کرلیا گیا ۔ کئی قائدین کو گھروں میں نظر بند کردیا ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی کو 2 مرتبہ گرفتار کرتے ہوئے مختلف پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا ۔ مختلف مقامات پر مہیلا کانگریس خواتین نے راستہ روکو احتجاج کیا ۔ پارٹی کارکنوں نے چیف منسٹر کا پتلا نذر آتش کیا ۔ اسمبلی کے سامنے ارکان اسمبلی نے دھرنا دیا ۔ سابق مرکزی وزیر رینوکاچودھری اور دوسرے قائدین بھی اسمبلی کے قریب پہونچ گئے ۔ گرفتار ہونے والوں میں جانا ریڈی اور محمد علی شبیر بھی شامل ہیں۔ تمام رکاوٹوں کے باوجود احتجاج کامیاب ہونے کا اتم کمار ریڈی نے دعویٰ کیا ۔ کانگریس پارٹی نے آج چلو اسمبلی ریالی منظم کرنے کا اعلان کیا ۔ پولیس کی جانب سے مختلف اضلاع میں دو دن قبل ہی کانگریس قائدین کو گرفتار کرنے یا انہیں گھروں میں نظر بند کردیا گیا اور اسمبلی کے احاطے میں بڑے پیمانے پر سیکوریٹی انتظامات کئے گئے ۔ کئی قائدین اور کارکنوں کو گرفتار کرنے کے باوجود سینکڑوں قائدین اور کارکن گاندھی بھون پہونچ گئے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی سابق مرکزی وزراء جئے پال ریڈی ، سروے ستیہ نارائنا ، بلرام نائیک ، سابق وزراء ڈی کے ارونا ، سبیتا اندرا ریڈی ، سنیتا لکشما ریڈی ، رام ریڈی دامودھر ریڈی ، سابق اسپیکر سریش ریڈی جنرل سکریٹریز تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی ایس کے افضل ، سید عظمت اللہ حسینی ، صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ محمد خواجہ فخر الدین کانگریس کے سینئیر قائدین سید یوسف ہاشمی ، سید شوکت رحمت علی ، محمد امتیاز صدر گریٹر حیدرآباد کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ شیخ عبداللہ سہیل سابق ارکان پارلیمنٹ انجن کمار یادو ، پونم پربھاکر کے علاوہ دوسرے قائدین موجود تھے ۔ اس موقع پر پارٹی قائدین و کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے کہا کہ حکومت کے غلط فیصلوں سے زرعی شعبہ بحران کا شکار ہوگیا ہے ۔ ابھی تک 3500 کسان خود کشی کرچکے ہیں ۔ حکومت کی جانب سے زرعی شعبہ کو نظر انداز کردیا گیا ہے ۔ جس کے خلاف کانگریس پارٹی نے چلو اسمبلی احتجاج منظم کیا ہے ۔ حکومت نے ریاست کو پولیس چھاونی میں تبدیل کرتے ہوئے تمام اضلاع میں کانگریس کے قائدین و کارکنوں کو گرفتار کرتے ہوئے چلو اسمبلی پرگرام کو ناکام بنانے کی کوشش کی ہے مگر وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہوئے اور احتجاجی پروگرام کامیاب رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست بھر میں تقریبا 50 ہزار قائدین و کارکنوں کو گرفتار کرتے ہوئے پولیس اسٹیشن منتقل کردیا گیا ۔ گاندھی بھون سے ریالی کی شکل میں اسمبلی کے لیے روانہ ہونے والے کانگریس قائدین اور کارکنوں کو پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ اتم کمار ریڈی ، ملو روی ، ایس کے افضل الدین ، جی نارائن ریڈی ، انیل کمار یادو اور دوسروں کو مادنا پیٹ پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا ۔ کانگریس قائدین کی گرفتاری پر کانگریس کی خاتون قائدین سبیتا اندرا ریڈی ، ڈی کے ارونا ، سنیتا لکشما ریڈی ، مہیلا کانگریس کی صدر این شاردا ، بی کارتیکا ریڈی ، عظمیٰ شاکر وغیرہ نے نامپلی چوراستہ پر راستہ روکو احتجاج کرتے ہوئے سڑکوں پر بیٹھ گئے ۔ انہیں گرفتار کرتے ہوئے گوشہ محل پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا ۔ کانگریس کارکنوں نے نامپلی پر بطور احتجاج چیف منسٹر کا پتلا نذر آتش کیا ۔ اسمبلی کے سامنے قائدین اپوزیشن کے جانا ریڈی ( اسمبلی ) محمد علی شبیر ( کونسل ) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی ، ورکنگ پریسیڈنٹ ملو بٹی وکرامارک کے علاوہ کانگریس کے ارکان اسمبلی ارکان قانون ساز کونسل نے اسمبلی کے پاس سڑک پر بیٹھتے ہوئے راستہ روکو احتجاج منظم کیا ۔ پولیس نے انہیں گرفتار کرتے ہوئے گاندھی نگر پولیس اسٹیشن منتقل کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT