Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس کارکنوں کو راجیو گاندھی کے خوابوں کی تکمیل کیلئے کمربستہ ہونے کا مشورہ

کانگریس کارکنوں کو راجیو گاندھی کے خوابوں کی تکمیل کیلئے کمربستہ ہونے کا مشورہ

گاندھی بھون میں سدبھاؤنا یاترا کا خیرمقدم، صدر تلنگانہ پی سی سی اتم کمار ریڈی کا خطاب
حیدرآباد /14 اگست (سیاست نیوز) آج گاندھی بھون میں راجیو گاندھی سدبھاؤنا یاترا کا خیرمقدم کرنے کے بعد پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی نے راجیو گاندھی کے خوابوں کی تکمیل کے لئے کمربستہ ہو جانے کا مشورہ دیا۔ اس موقع پر صدر آندھرا پردیش کانگریس این رگھوویرا ریڈی، قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر، کانگریس کے رکن راجیہ سبھا وی ہنمنت راؤ، سابق وزیر ڈی کے ارونا، کانگریس کے ارکان قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین، ایم ایس پربھاکر، پی سدھاکر ریڈی، سابق ارکان پارلیمنٹ انجن کمار یادو، جی ویویک اور دیگر بھی موجود تھے۔ انھوں نے کہا کہ ملک کے لئے راجیو گاندھی کی خدمات ناقابل فراموش ہیں، انھوں نے جتنی توجہ ملک کو ترقی دینے میں دی، اتنی ہی ترقی ملک کے نوجوانوں کو عصری ٹیکنالوجی سے لیس کرنے پر دی تھی۔ انھوں نے کہا کہ راجیو گاندھی کی بدولت ملک میں انقلابی ترقی ہوئی اور ہندوستان کے دنیا کے دیگر ممالک سے خوشگوار تعلقات ہوئے۔ آنجہانی قائد انتشار اور تشدد کے خلاف تھے اور امن و امان کی تحریک چلا رہے تھے، تاہم دہشت گردوں نے انھیں پرمبدور میں ہلاک کردیا، تاہم نوجوان نسل کو ملک کی سیاست میں حصہ دار بنانے کے معاملے میں اہم رول ادا کرنے والے راجیو گاندھی کے خوابوں کو پورا کرنے کی ذمہ داری کانگریس کیڈر اور نوجوان نسل پر ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہندوستان چھوڑدو تحریک کی مطابقت میں 9 اگست کو ہر سال راجیو گاندھی سدبھاؤنا یاترا کا آغاز ہوتا ہے، جو ملک کی مختلف ریاستوں کا احاطہ کرتے ہوئے آنجہانی قائد کی یوم پیدائش تقریب کے موقع پر دہلی پہنچتی ہے۔ دریں اثناء این رگھوویرا ریڈی نے کہا کہ ملک کے لئے مثالی اقدار فراہم کر نے میں راجیو گاندھی کا رول ناقابل فراموش ہے، ان کے خوابوں کو پورا کرنا تمام کانگریسیوں کی ذمہ داری ہے۔ اسی دوران محمد علی شبیر نے راجیو گاندھی کو ملک کا اثاثہ قرار دیتے ہوئے مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج کی جانب سے راجیو گاندھی پر لگائے گئے الزامات کی سخت مذمت کی۔ انھوں نے کہا کہ راجیو گاندھی کے خلاف عائد کردہ الزامات کو عدلیہ مسترد کرچکی ہے، لہذا آنجہانی قائد پر بے بنیاد الزامات لگانا وزیر خارجہ کے لئے مناسب نہیں ہے، انھیں چاہئے کہ وہ ان الزامات سے فوراً دست بردار ہو جائیں اور للت مودی کی مدد کرنے کے معاملے میں عوام سے معذرت خواہی کریں۔

TOPPOPULARRECENT