Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس کا آج چلو ملنا ساگر پروگرام

کانگریس کا آج چلو ملنا ساگر پروگرام

کسانوں پر فائرنگ و لاٹھی چارج اور اپوزیشن پر مقدمات کی مذمت ، ملو بٹی وکرامارک
حیدرآباد ۔ 25 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز) : ورکنگ پریسیڈنٹ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر ملو بٹی وکرامارک نے جائز مطالبات کرنے والے کسانوں پر فائرنگ و لاٹھی چارج کرنے کے بعد اپوزیشن پر جھوٹے الزامات عائد کرنے کی سخت مذمت کی ۔ 26 جولائی کو چلو ملناساگر پروگرام منظم کرنے کا اعلان کیا ۔ گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر جنرل سکریٹریز تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر کم کمار مسٹر پی رویندر راؤ ترجمان مسٹر کے مہیش این ایس یو آئی صدر مسٹر بی وینکٹ بھی موجود تھے ۔ مسٹر ملو بٹی وکرامارک نے ریاستی وزیر ہریش راؤ کی جانب سے کسان رضاکارانہ طور پر اراضی حوالے کرنے کا دعویٰ کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں پر کسانوں کو گمراہ کرنے کے عائد کردہ الزامات کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب کسان رضاکارانہ طور پر اراضیات حوالے کررہے ہیں تو ان پر فائرنگ اور لاٹھی چارج کرنے کی نوبت کیوں آئی ، کیا احتجاج کرنے والے کسان نہیں ہے کیا ؟ انہوں نے اپوزیشن کا بند ناکام ہونے ہریش راؤ کے دعویٰ پر بھی ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بند ناکام تھا تو اپوزیشن جماعتوں بالخصوص کانگریس قائدین کو کیوں گرفتار کیا گیا ۔ اراضیات سے محروم کسانوں کے ساتھ حکومت کی کوئی ہمدردی نہیں ہے ۔ ان کے خلاف ظلم و زیادتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ڈر و خوف کا ماحول پیدا کیا جارہا ہے ۔ فائرنگ کے ذریعہ ڈرا دھمکاکر حکومت غریب کسانوں سے زبردستی اراضی حاصل کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ حصول اراضیات کے لیے راحت کاری کے اقدامات کے علاوہ  خصوصی رعایتیں فراہم کرنے کے ساتھ فلاحی اسکیمات سے فائدہ پہونچایا جاتا ہے ۔ تاہم تلنگانہ حکومت ڈرا دھمکاکر اراضیات حاصل کررہی ہے ۔ اپنے آبائی ضلع اور اپنے نمائندگی کرنے والے اسمبلی حلقہ میں ہنگامہ آرائی پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ چیف منسٹر خاموشی اختیار کیے ہیں اس مسئلہ پر کے سی آر نے ایک بار بھی جائزہ اجلاس طلب نہیں کیا ۔ حکومت کسانوں کے مسائل کو نظر انداز کرتے ہوئے ان کی توہین کررہی ہے ۔ حکومت اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں ۔ اراضیات دینے کے لیے تیار نہ رہنے والے کسانوں سے زبردستی نہ کریں ۔ مسٹر ملو بٹی وکرامارک نے کہا کہ ماضی میں کانگریس کے دور حکومت میں کئی آبپاشی پراجکٹس تعمیر کیے گئے تاہم کسانوں کی مرضی کے خلاف ان کی اراضی حاصل نہیں کی گئی ۔ جمہوری انداز میں احتجاج کرنے والے کسانوں کو گرفتار کرتے ہوئے جیلوں میں منتقل کرنے کا حکومت پر الزام عائد کیا ۔ بالخصوص سابق ڈپٹی چیف منسٹر دامودھر راج نرسمہا صدر ضلع میدک کانگریس کمیٹی مسز سنیتا لکشما ریڈی سابق رکن اسمبلی مسٹر جگا ریڈی کے علاوہ کئی اہم قائدین کو گرفتار کرلیا گیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT