کانگریس کا وعدہ مکمل ، دیگر پارٹیوں پر وعدوں کو نبھانے کا مشورہ

او یو ٹیچرس اسوسی ایشن کی گول میز کانفرنس ، سیاست داں و دیگر کا خطاب

او یو ٹیچرس اسوسی ایشن کی گول میز کانفرنس ، سیاست داں و دیگر کا خطاب

حیدرآباد ۔ 7 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : ریاست تلنگانہ کی تشکیل کا مرحلہ پورا ہونا ایک مرحلہ کی تکمیل ہے ۔ تلنگانہ میں عوام نے جن خواہشات اور امیدوں کے ساتھ تحریک تلنگانہ میں حصہ لیا اس کی تکمیل پر ہی علحدہ ریاست کی تشکیل کا مقصد پورا ہوگا ۔ عثمانیہ یونیورسٹی ٹیچرس اسوسی ایشن کی جانب سے منعقدہ گول میز مذاکرہ سے خطاب کے دوران مختلف سیاسی جماعتوں کے قائدین نے یہ بات کہی ۔ اس اجلاس میں رکن راجیہ سبھا مسٹر یم ہنمنت راؤ ، مسٹر بی ونود کمار سابق رکن پارلیمنٹ ، مسٹر کے دلیپ کمار رکن قانون ساز کونسل کے علاوہ دیگر موجود تھے ۔ مسٹر ہنمنت راؤ نے اس موقعہ پر اپنے خطاب کے دوران کہا کہ ریاست کی تشکیل جدید کا جو وعدہ کانگریس نے کیا تھا اس وعدہ کو کانگریس نے پورا کیا اور اب دیگر سیاسی جماعتوں کو بھی چاہئے کہ وہ تشکیل تلنگانہ پر اپنے وعدوں کو یاد رکھتے ہوئے انہیں پورا کریں ۔ بالواسطہ طور پر مسٹر ایم وی ہنمنت راؤ نے تلنگانہ راشٹرا سمیتی کو نشانہ بناتے ہوئے یہ بات کہی ۔ انہوں نے تشکیل تلنگانہ میں ہونے والی تاخیر کے لیے سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کو مورد الزام قرار دیتے ہوئے کہا کہ 2008 میں ہی تشکیل تلنگانہ کا عمل مکمل ہوجاتا اگر وہ رکاوٹیں پیدا نہیں کرتے ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ میں عوام کو ان کی خواہشات و توقعات کے مطابق حکمرانی کی فراہمی کے علاوہ ترقی بنیادی مقصد ہونا چاہئے ۔ مسٹر بی ونود کمار سابق رکن پارلیمنٹ و قائد تلنگانہ راشٹرا سمیتی نے اس اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تحریک تلنگانہ کی کامیابی کے لیے طلبہ و اساتذہ و دانشوروں کی جدوجہد کوفراموش نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے بتایا کہ طلبہ و اساتذہ نے جن توقعات کے تئیں تحریک تلنگانہ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ۔

انہیں پورا کرنے کا عمل بھی ان سے مشاورت کے ذریعہ ہی کیا جانا چاہئے ۔ مسٹر بی ونود کمار نے کہا کہ ریاست تلنگانہ کو سماجی ، ترقیاتی و تہذیبی اعتبار سے مستحکم بنانے کی کوششوں کا آغاز کرنے کا وقت ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ راشٹرا سمیتی نے تحریک تلنگانہ کو ختم ہونے سے روکنے کے لیے ممکنہ جدوجہد کرتے ہوئے یہ ثابت کردیا کہ جہد مسلسل کے ذریعہ منزل تک پہنچنا دشوار نہیں ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں سماجی انصاف کے وعدے کو پورا کرنے میں ٹی آر ایس سنجیدہ ہے جب کہ دیگر سیاسی جماعتیں تلنگانہ عوام کے مسائل کی یکسوئی کے بجائے ان کے استحصال میں مصروف ہیں ۔ رکن قانون ساز کونسل مسٹر دلیپ کمار راشٹرا لوک دل نے بتایا کہ ریاست کی ترقی و خوشحالی عوام کی خوشحالی پر انحصار کرتی ہے اسی لیے عوام کی ترقی کو یقینی بنایا جانا ناگزیر ہے ۔ اس اجلاس میں ین جی اوز سربراہ دیوی پرساد ، کنوینر اساتذہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی مسٹر لکشمن کے علاوہ پروفیسر بی ستیہ نارائنا ، ڈاکٹر اے کرشنیا ، ڈاکٹر بی منوہر ، پروفیسر اے راملو کے علاوہ جامعہ عثمانیہ ٹیچرس اسوسی ایشن کے ذمہ داران و اساتذہ کی کثیر تعداد نے شرکت کرتے ہوئے سیکولر ، تہذیبی ، معاشی اور ترقیاتی اعتبار سے مستحکم ریاست کی تشکیل پر تجاویز پیش کیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT