Saturday , December 15 2018

کانگریس کو اقتدار ملنے پر پٹرول و ڈیزل کو بھی جی ایس ٹی دائرہ میں لایا جائیگا

جی ایس ٹی کے موجودہ ڈھانچہ کو تبدیل کرنے کا عہد ۔ اے پی کو خصوصی موقف کی حمایت ۔ راہول گاندھی کا طلبا سے تبادلہ خیال
کرنول ( آندھرا پردیش ) 18 ستمبر ( پی ٹی آئی ) بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے آج واضح کیا کہ ان کی پارٹی کو 2019 میں اقتدار حاصل ہوتا ہے تو وہ آندھرا پردیش کوخصوصی ریاست کا موقف دینے کی پابند ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کو مرکزی حکومت سے خاص مدد کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے یہاں کالج طلبا کے ساتھ بائی ریڈی کنونشن سنٹر میں تبادلہ خیال کے دوران کہا کہ ساری قوم اور وزیر اعظم ‘ ریاست آندھرا پردیش کیلئے کچھ کرنا باقی ہیں۔ مرکزی حکومت کو ریاست کو خصوصی زمرہ کا موقف دینا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کا وعدہ وزیر اعظم کی حیثیت سے منموہن سنگھ نے 2014 میں کیا تھا لیکن وزیر اعظم نریندر مودی نے اس وعدہ کو پورا نہیں کیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ریاست کے کمزور اضلاع کو خصوصی مدد کی ضرورت ہے اور کانگریس اس معاملہ میںواضح موقف رکھتی ہے کہ ریاست کے کمزور اضلاع کو یکسانیت سے ترقی کرنی چاہئے ۔ انہوںنے واضح کیا کہ ان کی پارٹی ایسا کرنے کی پابند عہد ہے ۔ کانگریس صدر کا یہ ریاست کی تقسیم کے بعد دوسرا دورہ آندھرا پردیش تھا ۔ انہوں نے طلبا کے کئی سوالات کے جواب دئے ۔ یہ سوالات جی ایس ٹی ‘ فیول قیمتوں میں اضافہ ‘ زرعی شعبہ میں بحران ‘ بیروزگاری ‘ کرپشن ‘ خواتین کی حفاظت اور بینکنگ شعبہ سے متعلق تھے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس پارٹی 2019 میں اقتدار پر آتی ہے تو وہ جی ایس ٹی پر نفاذ کے طریقہ کار کو تبدیل کردیگی ۔ اس کے علاوہ پٹرول اور ڈیزل کو بھی جی ایس ٹی کے دائرہ میں لایا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ جی ایس ٹی پر جس طرح سے ملک میں عمل کیا جا رہا ہے وہ حقیقی جی ایس ٹی نہیں ہے ۔ کانگریس اقتدار میں صرف ایک ٹیکس عائد کیا جائیگا ۔ خواتین کے تحفظ کے تعلق سے سوال پر انہوں نے ملک کی خواتین سے خواہش کی کہ وہ ملک کی سیاست میں بھی سرگرم حصہ لیں۔

TOPPOPULARRECENT