Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس کو تلنگانہ سے اسمبلی کے 80 اور لوک سبھا کی 16 نشستوں سے کامیابی

کانگریس کو تلنگانہ سے اسمبلی کے 80 اور لوک سبھا کی 16 نشستوں سے کامیابی

حیدرآباد ۔ 5 ۔ مارچ : ( آئی این این ) : سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی و ایم ایل سی مسٹر ڈی سرینواس نے آج اس بات کا ادعا اور یقین ظاہر کیا کہ کانگریس پارٹی تلنگانہ اور سیما آندھرا علاقوں سے اکثریت سے کامیابی حاصل کرے گی ۔ دونوں علاقوں کے چیف منسٹرس بھی کانگریس پارٹی کے ہی ہوں گے اور وہ 2 جون کو ہی حلف لیں گے ۔ وہ یہاں پریس کانفرنس سے مخاطب کر

حیدرآباد ۔ 5 ۔ مارچ : ( آئی این این ) : سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی و ایم ایل سی مسٹر ڈی سرینواس نے آج اس بات کا ادعا اور یقین ظاہر کیا کہ کانگریس پارٹی تلنگانہ اور سیما آندھرا علاقوں سے اکثریت سے کامیابی حاصل کرے گی ۔ دونوں علاقوں کے چیف منسٹرس بھی کانگریس پارٹی کے ہی ہوں گے اور وہ 2 جون کو ہی حلف لیں گے ۔ وہ یہاں پریس کانفرنس سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ انتخابات غیر منقسم آندھرا پردیش میں صدر کل ہند کانگریس کمیٹی شریمتی سونیا گاندھی کی نگرانی میں منعقد ہوں گے جس میں تلنگانہ سے پارٹی کو کم از کم 80 اسمبلی اور 16 لوک سبھا نشستوں سے بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل کریں گے ۔ مسٹر ڈی سرینواس نے الیکشن کمیشن سے درخواست کی کہ وہ 30 مارچ کو منعقد شدنی مقامی ادارہ جاتی انتخابات کی تواریخ اور شیڈول پر اجلاس منعقد کرے ۔ سابق صدر پی سی سی نے مزید کہا کہ 27 مارچ سے ڈگری امتحانات کا آغاز ہورہا ہے ۔ ایسے میں بلدی انتخابات کے باعث ڈگری سال آخر کے طلباء پر منفی اثر پڑے گا ۔ کیوں کہ ڈگری طلباء کے لیے سال آخر کافی قیمتی ہوتاہے ۔ مسٹر ڈی سرینواس نے سربراہ ٹی آرا یس مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی جانب سے ٹی آر ایس کا کانگریس میں ضم نہ کئے جانے سے متعلق دئیے گئے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس پارٹی نے کبھی بھی ٹی آر ایس کو ضم کرنے کا پیشکش نہیں کی ہے

بلکہ کے سی آر نے خود ہی پارلیمنٹ میں تلنگانہ بل کی منظوری پر ٹی آر ایس پارٹی کو کانگریس میں ضم کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ تاہم دونوں پارٹیوں کے درمیان اتحاد کے لیے ٹی آر ایس نے ڈاکٹر کے کیشو راؤ کی صدارت میں ایک جائزہ کمیٹی تشکیل دی ہے ۔ دونوں پارٹیوں سے رابطہ کار کا رول ادا کر کے فیصلہ کرے گی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کانگریس نے ٹی آر ایس کو ضم کرنے کو نہیں کہا تھا بلکہ کے سی آر نے ہی اس کا پیشکش کیا تھا ۔ مسٹر ڈی سرینواس نے آخر میں اس بات کا ادعا کیا کہ کانگریس ہائی کمان جو بھی فیصلہ کرے گی وہ پارٹی قائدین کے لیے قابل قبول رہے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر تلنگانہ جے اے سی انتخابات میں حصہ لینے کی خواہش مند ہو تو کانگریس اس کا خیر مقدم کرے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT