Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس کی ساکھ بحال کرنے سڑکوں پر احتجاج کی سیاست کا احیاء ضروری

کانگریس کی ساکھ بحال کرنے سڑکوں پر احتجاج کی سیاست کا احیاء ضروری

حیدرآباد۔/8اپریل، ( پی ٹی آئی) کانگریس کے سینئر لیڈر جئے رام رمیش نے کہا کہ انتخابی شکست سے دوچار کانگریس کو اپنی ساکھ بحال کرنے کیلئے سڑکوں پر احتجاج اورایجی ٹیشن کی سیاست کا احیاء کرنے کی ضرورت ہے۔ لوک سبھا انتخابات میں اس کی ہزیمت کا نوٹ لیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پارٹی کی تنظیم جدید کا موقع ہے اور پارٹی کو نئی نسل پر اپنی توجہ مرکو

حیدرآباد۔/8اپریل، ( پی ٹی آئی) کانگریس کے سینئر لیڈر جئے رام رمیش نے کہا کہ انتخابی شکست سے دوچار کانگریس کو اپنی ساکھ بحال کرنے کیلئے سڑکوں پر احتجاج اورایجی ٹیشن کی سیاست کا احیاء کرنے کی ضرورت ہے۔ لوک سبھا انتخابات میں اس کی ہزیمت کا نوٹ لیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پارٹی کی تنظیم جدید کا موقع ہے اور پارٹی کو نئی نسل پر اپنی توجہ مرکوز کرنی ہوگی۔ سابق مرکزی وزیر نے یہ بھی کہا کہ راہول گاندھی کے صدر کانگریس بننے پر کوئی غیریقینی کیفیت نہیں ہے۔ راہول گاندھی اپنی والدہ صدر کانگریس سونیا گاند ھی کے جانشین ہوں گے۔ کانگریس ایک قدیم پارٹی ہے اور ایک طویل عرصہ سے حکمرانی کے فرائض انجام دے رہی ہے۔ اب اسے احتجاجی سیاست کو دوبارہ دریافت کرتے ہوئے اپنی کھوئی ہوئی ساکھ بحال کرنی ہوگی۔ کانگریس طویل مدت تک حکومت کرنے والی پارٹی ہے اور اب اس نے خود کو اپوزیشن میں بٹھایا ہے اور اسے اپنی طاقت کو مجتمع کرنے کیلئے کوشش کرنی ہوگی چاہے اس کے لئے سڑک کی سیاست کی جائے یا احتجاجی سیاست کا راستہ اختیار کیا جائے۔جئے رام رمیش جنہوں نے یو پی اے حکومت میں اہم دیہی ترقی اور ماحولیات کا قلمدان رکھا تھا اس بات کی نشاندہی کی کہ تنظیم جدید کا کام اس وقت ہوتا ہے جب پارٹی اقتدار میں ہوتی ہے

اور کانگریس کی تنظیم جدید اقتدار سے باہر رہنے پر کی جاتی ہے۔ یہ موقع ہے کہ کانگریس حصول اراضی ترمیمی بل کے خلاف اپنے احتجاج میں شدت لائے۔ جئے رام رمیش نے کہا کہ راہول گاندھی جلد یا بدیر کانگریس کے صدر بنیں گے کیونکہ اس عہدہ کیلئے کوئی دوسرا دعویدار نہیں ہے۔ راہول گاندھی کے صدر کانگریس بننے پر کوئی غیر یقینی کیفیت بھی نہیں ہے۔ کانگریس صدر کیلئے بعض دیگر نام بھی سامنے آرہے ہیں لیکن راہول گاندھی فرد واحد ہیں جو اس عہدہ کے حقدار ہیں۔ صدر کانگریس سونیاگاندھی جس دن استعفی دیں گی صرف نائب صدر کو ہی صدر بنایا جائے گا۔ اس خیال کو مسترد کرتے ہوئے کہ راہول گاندھی میں سیاسی پختگی اور شعور کا فقدان پایا جاتا ہے، جئے رام رمیش نے راہول گاندھی کو ہندوستانی سیاست کا مردِ آہن قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے پہلے بھی کہا تھا اور اب بھی کہتا ہوں کہ وہ ( راہول گاندھی) سیاسی میدان کے مضبوط کھلاڑی ہیں۔ وہ خود احتسابی کیلئے پارٹی اُمور سے دور ہوئے ہیں۔ رمیش نے کہا کہ لوک سبھا انتخابات کے بعد پارٹی کو بدترین ہزیمت کا سامنا کرنا پڑا اور اس کے حق میں صرف 44نشستیں آئی تھیں۔ لہذا اب اس پارٹی کو نئی نسل پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT