Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس کی وجہ سے کھمم میں اردو کو نقصان : محمد محمود علی

کانگریس کی وجہ سے کھمم میں اردو کو نقصان : محمد محمود علی

تلنگانہ میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا موقف، حکومت کا تاریخی فیصلہ، ڈپٹی چیف منسٹر کا میڈیا سے خطاب
حیدرآباد ۔16۔ نومبر (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اردو کو ریاست میں دوسری سرکاری زبان کا موقف دیئے جانے کو تاریخی فیصلہ قرار دیا اور کہا کہ اسمبلی میں بل کی منظوری دراصل چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی اردو زبان سے محبت کا ثبوت ہے۔ اسمبلی اجلاس کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ تلنگانہ اسمبلی کا آج تاریخی دن رہا جہاں اردو سے انصاف کیا گیا۔ گزشتہ 14 برسوں سے تلنگانہ کے عوام اردو کے ساتھ انصاف کے منتظر تھے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے وعدہ کی تکمیل کرتے ہوئے ریاست بھر میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا موقف دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کی خصوصیت یہ ہے کہ وہ صرف وعدہ نہیں بلکہ اس کی تکمیل پر یقین رکھتے ہیں۔ تلنگانہ تحریک کے دوران مسلمانوں سے جو وعدے کئے گئے تھے ، ان پر عمل آوری جاری ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ اسمبلی میں چیف منسٹر کے اعلان کے اندرون ایک ہفتہ اسمبلی میں بل کی منظوری چیف منسٹر کی سنجیدگی کو ظاہر کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری دفاتر میں 66 اردو مترجمین کے تقرر کا تاریخی فیصلہ کیا گیا ہے جس پر اندرون دو ماہ عمل آوری کی جائے گی ۔ محمود علی نے بل کی منظوری کے بعد چیف منسٹر کے سی آر کو مبارکباد پیش کی اور امید ظاہر کی کہ تلنگانہ میں یہ فیصلہ اردو زبان کی نشاط ثانیہ کا سبب بنے گا۔ ہندوستان بھر میں تلنگانہ حکومت نے اردو زبان کی ترقی کے سلسلہ میں رہنمائی کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ جو اردو داں ہیں، تاہم وہ اردو پڑھ نہیں سکتے۔ چیف منسٹر نے ان سے خواہش کی ہے کہ اردو سکھانے کیلئے کسی استاد کا انتظام کریں تاکہ وہ اردو بولنے کے علاوہ لکھنے اور پڑھنے کے قابل بن جائیں۔ محمود علی نے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے اردو کی ترقی کے بارے میں بلند بانگ دعوے کئے لیکن کسی نے سنجیدہ اقدامات نہیں کئے۔ متحدہ آندھرا میں تلنگانہ کے 9 اضلاع میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا موقف حاصل تھا لیکن حکومت نے عمل آوری میں سنجیدگی نہیں دکھائی۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کی قیادت میں ٹی آر ایس حکومت اردو کو روزگار سے مربوط کرتے ہوئے ہزاروں نوجوانوں کیلئے روزگار کے مواقع پیدا کریں گے۔ انہوں نے تلنگانہ کے اردو داں طبقہ سے اپیل کی کہ چیف منسٹر کے اس تاریخی اقدام کی کھل کر تائید اور ستائش کریں۔

TOPPOPULARRECENT