Wednesday , August 15 2018
Home / سیاسیات / کانگریس کی پہلی فہرست میں 20 پٹیل امیدوار ، مگر آندولن سمیتی کے دو ارکان

کانگریس کی پہلی فہرست میں 20 پٹیل امیدوار ، مگر آندولن سمیتی کے دو ارکان

ہاردک پٹیل کی تنظیم کو مایوسی ۔ کوٹہ ایجی ٹیشن لیڈر نے راجکوٹ کی ریالی منسوخ کردی۔ کانگریس کو غیر متوقع احتجاج کا سامنا
احمدآباد 20 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) گجرات اسمبلی انتخابات کے لئے کانگریس کی جانب سے جاری کردہ امیدواروں کی پہلی فہرست سے پاٹیدار انامت آندولن سمیتی (PAAS) کو مایوسی ہوئی ہے کیونکہ اُس کے صرف دو ارکان کو اِس میں جگہ ملی ہے۔ سمیتی کے دو ارکان للت وسویا اور امیت تھومر کے نام کل جاری کردہ فہرست میں پائے گئے جبکہ ہاردک پٹیل زیرقیادت تنظیم نے 20 نشستوں کا مطالبہ کیا تھا۔ اِس تبدیلی پر افسردہ سمیتی قیادت نے اپنے دونوں ارکان (جنھیں ٹکٹ دیئے گئے) کو اپنے کاغذات نامزدگی بطور احتجاج داخل نہ کرنے کی ہدایت دی ہے۔ تاہم اُن میں سے ایک (وسویا) نے آج کانگریس ٹکٹ پر دھرواجی نشست سے اپنی نامزدگی داخل کردی ہے۔ اُن کی نامزدگی کے ادخال پر پٹیل کوٹہ ایجی ٹیشن لیڈر ہاردک پٹیل نے سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی کی تحریر کردہ ایک نظم کے مصرعے ٹوئیٹ کئے۔ ’’بدھائیں آتی ہیں، آئیں گی، گھرے پرالے کی گھور گھٹائیں، پاؤں کے نیچے انگارے، سر پر برسے یادی جوالا، نیج ہٹو میں ہنستے ہنستے، آگ لگاکر جلنا ہوگا، قدم ملاکر چلنا ہوگا‘‘ اِن اشعار کا ترجمہ کچھ یوں کیا جاسکتا ہے : ’’رکاوٹیں آتی رہتی ہیں، آسمان بھلے ہی گھٹاؤں سے چھا جائے، آپ کے پیروں تلے انگارے ہوں، آپ کے سر پر آتش کی بارش ہوتی ہو، لیکن ہمیں اپنے ہاتھ آگ پر رکھنے ہی ہوں گے، ہمیں ساتھ مل کر قدم بہ قدم چلنا ہی ہوگا‘‘۔ ہاردک نے ٹکٹوں کی تقسیم پر تنازعہ کے بعد اپنی ریالی منسوخ بھی کردی ہے جو راجکوٹ میں منعقد ہونے والی تھی جہاں اُن سے کانگریس پارٹی کے حق میں تائید کا اعلان کی توقع تھی۔ کانگریس نے گزشتہ شب 77 امیدواروں کی اپنی پہلی فہرست جاری کردی جس میں سمیتی کے دو ارکان کو جگہ دی گئی اور زائداز 20 پٹیل امیدواروں کو ٹکٹ دیئے ہیں۔ پہلی فہرست جاری کرنے کے فوری بعد برہم سمیتی اراکین نے ریاست کے کئی حصوں میں احتجاج شروع کردیا اور وہ دعویٰ کرنے لگے کہ اُنھیں جاری کردہ فہرست میں مناسب نمائندگی نہیں دی گئی۔ سورت میں سمیتی ارکان نے کانگریس سٹی یونٹ آفس میں توڑ پھوڑ مچائی اور پارٹی کے خلاف نعرے بازی میں ملوث ہوئے۔ سورت سٹی کے سمیتی کنوینر دھارمک مالویا نے کل رات اخباری نمائندوں کو بتایا تھا کہ ہماری کمیونٹی کے ارکان کو اِس فہرست میں مناسب نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔ ہم ریاست میں کوئی کانگریس آفس کو کام کرنے نہیںدیں گے۔ احمدآباد میں سمیتی کنوینر دنیش بھمبانیا نے اپنے حامیوں کے ساتھ صدر پردیش کانگریس بھرت سنہہ سولنکی کے مکان پر اُدھم مچائی۔ ایک اور سمیتی کنوینر الپیش کتھیریا نے کہاکہ کانگریس نے ہمیں اعتماد میں لئے بغیر ہمارے صرف دو ارکان کو ٹکٹ دیئے ہیں۔ دیگر پٹیل امیدوار جو منتخب ہوئے وہ بوگس ہیں۔ ہم کانگریس کے خلاف زبردست احتجاج منعقد کریں گے۔ کانگریس پارٹی کی جانب سے کئی مقامات پر پولیس کوطلب کرنا پڑا ۔ اسٹیٹ کانگریس ہیڈکوارٹرس واقع پلڈی ایریا میں بڑی تعداد میں سکیورٹی متعین کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT