کانگریس کے سرکردہ قائدین کی لوک سبھا انتخابات کی تیاریاں

اسمبلی انتخابات میں شکست کے باوجود پارلیمانی انتخابات کیلئے پر امید۔ حلقوں کے تعلق سے غور و خوض کا آغاز

حیدرآباد 18 ڈسمبر (سیاست نیوز) اسمبلی انتخابات میں شکست سے دوچار ہوجانے کے بعد کانگریس کے کچھ قائدین لوک سبھا انتخابات کی تیاریوں میں مصروف ہوگئے ہیں۔ نلگنڈہ سے کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی، کھمم سے رینوکا چودھری، محبوب نگر سے جئے پال ریڈی اور ریونت ریڈی ‘ بھونگیر سے جی نارائن ریڈی اور پنالہ لکشمیا نے تیاریاں شروع کردی ہیں۔ تمام اضلاع میں کانگریس کو شکست کے باعث دعویداروں میں فہرست میں زیادہ قائدین نظر نہیں آرہے ہیں۔ اسمبلی انتخابات میں ایڑی چوٹی کا زور لگانے والے قائدین نے لوک سبھا انتخابات کیلئے دوبارہ تیاری شروع کردی ہے۔ یہ قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ فبروری یا مارچ میں لوک سبھا انتخابات کیلئے شیڈول کی اجرائی عمل میں لائی جاسکتی ہے۔ جس کا جائزہ لینے کے بعد کانگریس قائدین لوک سبھا انتخابات کیلئے اپنی قسمت آزمانا چاہتے ہیں۔ بیشتر قائدین اسمبلی انتخابات میں کانگریس کا مظاہرہ بہتر نہ ہونے پر مایوس ہیں لیکن ان کا یہ احساس ہے کہ اسمبلی کیلئے بھلے ہی ٹی آر ایس کیلئے ماحول سازگار رہا ہو لیکن لوک سبھا انتخابات تک حالات کانگریس کیلئے سازگار ہوجائیں گے کیوں کہ لوک سبھا کے انتخابات قومی مسائل پر لڑے جاتے ہیں اور بی جے پی کے زیرقیادت این ڈی اے حکومت کی کارکردگی مایوس کن ہے جو کانگریس کیلئے بہتر ثابت ہوگی۔ اسمبلی حلقہ نلگنڈہ سے کانگریس کے امیدوار کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی کو شکست ہوئی ہے۔ وہ لوک سبھا انتخابات میں حلقہ لوک سبھا نلگنڈہ سے اپنی قسمت آزمانے کی تیاری کررہے ہیں۔ حلقہ لوک سبھا سکندرآباد سے سابق رکن پارلیمنٹ و صدر سٹی کانگریس کمیٹی ایم انجن کمار یادو سب سے بڑے دعویدار ہیں۔ تاہم حال میں ورکنگ صدر پردیش کانگریس کمیٹی نامزد ہونے والے سابق کرکٹر محمد اظہرالدین بھی دعویدار ہیں۔ حلقہ لوک سبھا محبوب نگر سے 2014 کے عام انتخابات میں سابق مرکزی وزیر ایس جئے پال ریڈی کو شکست ہوئی تھی۔ ان کے ساتھ ان کے رشتہ کے داماد سابق رکن اسمبلی کوڑنگل ریونت ریڈی بھی دعویدار ہیں۔ اسمبلی حلقہ جگتیال سے انتخابات ہارنے والے ٹی جیون ریڈی حلقہ لوک سبھا کریم نگر سے مقابلہ کرنے کے معاملہ میں سنجیدگی سے غور کررہے ہیں۔ حلقہ لوک سبھا نظام آباد سے سابق رکن پارلیمنٹ مدھو گوڑ یشکی، حلقہ لوک سبھا میدک سے فلم اسٹار سے سیاستداں بننے والی وجئے شانتی، حلقہ لوک سبھا چیوڑلہ سے حال ہی میں کانگریس میں شامل ہونے والے ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ کنڈا ویشویشور ریڈی، محبوب آباد سے سابق مرکزی وزیر بلرام نائک، حلقہ لوک سبھا پداپلی سے کے ستیہ نارائنا، حلقہ لوک سبھا ظہیرآباد سے ڈاکٹر گیتا ریڈی یا سریش شٹکار بھی میدان میں ہوسکتے ہیں۔ حلقہ لوک سبھا ملکاجگری سے سابق مرکزی وزراء ایس جئے پال ریڈی یا رینوکا چودھری کو مقابلہ کرانے کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT