Saturday , December 15 2018

کانگریس کے چہرے پر سیکولرازم کا نقاب اور بغل میں فرقہ پرستی کا تھیلا: نقوی

نئی دہلی 26 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے آج کانگریس پر الزام عائد کیاکہ وہ چہرے پر سیکولرازم کا نقاب لگائے ہوئے ہے اور اُس کی بغل میں فرقہ پرستی کا تھیلا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ یہی قدیم شاندار پارٹی کی نئی شکل ہے۔ مسلم برادری کے ارکان کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے مرکزی وزیر نے دعویٰ کیاکہ کانگریس کا حقیقی چہرہ یہ ہے کہ اِس کی پیشانی پر ایک بڑا تلک ہے۔ وہ اپنے چہرے پر بڑی چالاکی سے سیکولرازم کا نقاب لگالیتی ہے۔ مرکزی وزیر برائے اقلیتی اُمور مختار عباس نقوی نے کہاکہ سب کو ساتھ لے کر ترقی دینا اور قومی تلک پیشانی پر لگانا دو بالکل علیحدہ باتیں ہیں۔ اُنھوں نے کہاکہ ہندوستان کا تحفظ اور خوشحالی بی جے پی کا کام ہے۔ اِس سوال پر کہ کیا ملک ترقی کے راستے پر پیشرفت کررہا ہے اور پوری دنیا کا استاد بن گیا ہے۔ جیسا کہ اُن کے دفتر سے جاری کردہ بیان میں دعویٰ کیا گیا تھا نقوی نے الزام عائد کیاکہ کانگریس اور اُس کے قائدین منطق سے عاری ہیں اور اُن کے پاس بیان کرنے کے لئے حقائق نہیں ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ وہ انتخابات کے وقت کچھ اور زبان بولتے ہیں اور اِس کو ثابت نہیں کرپاتے ہیں۔ اُن کے پاس بی جے پی کے خلاف اور وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف اُٹھانے کے لئے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔مرکزی وزیر برائے اقلیتی اُمور مختار عباس نقوی اپنی تقاریر میں اقلیتی مسائل کے لئے ہمیشہ کانگریس دور اقتدار کو ذمہ دار قرار دیتے آئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT