Tuesday , August 21 2018
Home / Top Stories / کتہ گوڑم سے متصلہ چھتیس گڑھ کے گھنے جنگلات میں انکاونٹر 10 ماؤنواز ہلاک

کتہ گوڑم سے متصلہ چھتیس گڑھ کے گھنے جنگلات میں انکاونٹر 10 ماؤنواز ہلاک

تلنگانہ گرے ہاونڈس کی مقامی پولیس کے ساتھ مشترکہ کارروائی ، ایک جونئیر کمانڈو بھی فوت ، مہلوکین میں چھ خاتون انتہاء پسند شامل

بھدراچلم میں پوسٹ مارٹم : ہائیکورٹ کی ہدایت

رائے پور / حیدرآباد /2 مارچ (پی ٹی آئی ) تلنگانہ پولیس کی اعلی تربیت یافتہ گرے ہاونڈ فورس نے چھتیس گڑھ کے ضلع بیجاپور کے دور افتادہ جنگلاتی علاقہ میں آج صبح بڑی کارروائی میں کم از کم 10 ماؤنوازوں کو ہلاک کردیا جن میں چند سینئر نکسلائیٹس بھی شامل ہوسکتے ہیں۔ گرے ہانڈس کا ایک اہلکار بھی اس کارروائی میں فوت ہوگیا ۔ عہدیداروں نے کہا کہ انٹلی جنس رپورٹ کی بنیاد پر تلنگانہ گرے ہاؤنڈس نے ریاست چھتیس گڑھ میں ضلع بدراری کتہ گوڑم سے35 کیلومیٹر دور افتادہ علاقہ میں ماؤ نوازوں کے کیمپ پر کارروائی شروع کی تھی ۔ نکسلائیٹس کے خلاف کارروائیوں کی ماہر گرے ہاونڈس فورسیس نے ماؤنوازوں کے اس کیمپ پر مشترکہ کارروائی کے طور پر چھتیس گڑھ پولیس کے ساتھ یہ دھاوا کیا تھا ۔ ایک سینئیر عہدیدار نے کہا کہ فائرنگ کے تبادلہ میں گرے ہاؤنڈس کا ایک جوان زخمی ہوگیا ۔ تلنگانہ کے بھدرادری کتہ گوڑم ضلع کے سپرنٹنڈنٹ پولیس عنبر کشور جھا نے کہا کہ ’ اس انکاونٹر میں 10 ماؤنواز ہلاک ہوئے ۔ متوفیوں کی نعشوں کی شناخت کیلئے اسکریننگ کیا جارہی ہے ‘ انہوں نے کہا کہ ’ گرے ہاونڈس کا ایک جونئیر کمانڈر سشیل کمار بھی اپنی زندگی سے محروم ہوگیا ‘ ۔ عہدیداروں نے کہا کہ صبح 6.30 بجے شروع کی گئی کارروائی میں مہلوک 10 انتہاء پسندوں میں چھ خواتین شامل ہیں ۔ فائرنگ تبادلہ میں گرے ہاونڈس کے ایک جونئیر کمانڈر بھی اپنی جان سے محروم ہوئے ہیں ۔ ضلع پولیس کے ایک سینئیر عہدیدار نے کہا کہ انتہاء پسندوں کی نعشیں بھدراچلم ایریا ہاسپٹل کو منتقل کی جارہی ہیں ۔ انکاونٹر مقام سے ایک اے کے 47 رائفل دستیاب ہوئی ہے ۔ ماونوازوں میں عام رواج کے مطابق سینئیر ارکان کو ایسے ہائی ٹیک اسلحہ دئے جاتے ہیں ۔ بیجاپور پولیس سپرنٹنڈنٹ موہن گارگ نے پی ٹی آئی سے کہا کہ رائے پور سے 500 کیلومیٹر دور پامیڈ پولیس اسٹیشن کے حدود میں پجاری کانکر کے قریب واقع جنگلات میں گرے ہانڈس ٹیم اور باغیوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ چھتیس گڑھ اور تلنگانہ کے سیکوریٹی فورسیس نے انتہاء پسندوں کا بڑا گروپ جمع ہونے سے متعلق باوثوق خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر بین ریاستی سرحد پر اس جنگل میں تخریب کاروں کے خلاف یہ کارروائی شروع کی تھی ۔ گرے ہاونڈس آندھراپردیش اور تلنگانہ میں نکسلائیٹوں کے خلاف کارروائیاں کرنے والی خصوصی فورس ہے ۔ اس دوران ہائیکورٹ نے ریاستی حکومت کو ہدایت دی کہ فوت ماؤیسٹوں کی نعشوں کا پوسٹ مارٹم کیا جائے ۔ عدالت نے حکومت کو ہدایت دی کہ یہ پوسٹ مارٹم بھدراچلم کے سرکاری دواخانہ میں کیا جائے اور اس سارے عمل کی ویڈیو ریکارڈنگ کی جائے ۔ عدالت نے حکومت سے کہا کہ فارنسک ماہرین کی موجودگی میں دو سینئر ڈاکٹرس پوسٹ مارٹم کریں اور نعشیں شناخت کے بعد ان کے رشتہ داروں کے حوالے کی جائیں۔ شناخت تک ان نعشوں کو بحفاظت رکھا جانا چاہئے ۔ ہائیکورٹ نے سیول لبرٹیز کمیٹی کی درخواست کو سماعت کیلئے قبول کرتے ہوئے یہ ہدایت دی جبکہ سیول لبرٹیز کمیٹی کے رکن ورا ورا راؤ نے پوسٹ مارٹم ایم جی ایم ورنگل ہاسپٹل میں کروانے کی خواہش کی تھی تاہم عدالت نے بھدرا چلم میں پوسٹ مارٹم کی ہدایت دی ۔

TOPPOPULARRECENT