Saturday , December 15 2018

کثرت سے دعاء کرنے عازمین حج کو تلقین

کریم نگر۔/26اگسٹ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حج ایک مرتبہ فرض ہے اور ایک سے زیادہ مرتبہ کرنا نفل ہے ، اسی طرح عمرہ بھی ہے ، ایک عمرہ سے دوسرے عمرہ تک درمیانی تمام گناہوں کا کفارہ ہے اور حج مبرور کا بدلہ صرف جنت ہی ہے۔ عمرہ اور حج کرنے والے اللہ تعالیٰ کے مہمان ہیں اور حاجیکی دعاء نہ صرف اپنے حق میں بلکہ دوسرے افراد کے لئے بھی کی گئی دعاء کو الل

کریم نگر۔/26اگسٹ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حج ایک مرتبہ فرض ہے اور ایک سے زیادہ مرتبہ کرنا نفل ہے ، اسی طرح عمرہ بھی ہے ، ایک عمرہ سے دوسرے عمرہ تک درمیانی تمام گناہوں کا کفارہ ہے اور حج مبرور کا بدلہ صرف جنت ہی ہے۔ عمرہ اور حج کرنے والے اللہ تعالیٰ کے مہمان ہیں اور حاجیکی دعاء نہ صرف اپنے حق میں بلکہ دوسرے افراد کے لئے بھی کی گئی دعاء کو اللہ تعالیٰ شرف قبولیت بخشتا ہے اس لئے کثرت سے حاجی صاحبان دعاء کرتے رہیں۔ اپنے لئے مغفرت کی اور اپنے دوست احباب و رشتہ داروں کی مغفرت کی دعاء کریں اور شاندار حج وہ ہے جس میں کثرت کے ساتھ تلبیہ کا ورد ہو۔ مولانا مفتی آصف الدین ماسٹر ٹرینر سنٹرل حج کمیٹی نے ان خیالات کا اظہار کیا۔ ضلع حج سوسائٹی کریم نگر کے زیر اہتمام تیسرا حج تربیتی پروگرام جو کہ محمد ریاض علی رضوی صدر ضلع حج سوسائٹی کی زیر صدارت ایس ایس گارڈن میں منعقد کیا گیا تھا اس سے خطاب کرررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ تلبیہ اس طرح سے پڑھتے رہیں کہ آپ کے اطراف و اکناف کا ماحول بھی اس سے گونج اٹھے، آپ کے آزو بازو پتھر کنکر، درخت بھی آپ کے ساتھ شریک ہوجائیں۔ انہوں نے کہا کہ عازمین حج جنہوں نے حج کا ارادہ کرلیا ہے، پہلی چیز اپنی جسمانی صحت اور دوسری حج کی صحیح طریقہ پر ادائیگی کی تربیت پالیں۔ اگر آپ اس کی صحیح طریقہ سے ادائیگی نہ کریں تو حج ادا نہ ہوگا۔ حج قبول ہو اس کے لئے حج کے تمام ارکان کی جانکاری ضروری ہے۔ حج کے ایام میں کثرت کے ساتھ قرآن مجید کی تلاوت کریں۔ مدینہ منورہ کی زیارت جو ایک خاص عبادت ہے اس کی برکتیں ساری عمر مرتے دم تک حاصل ہوتی رہتی ہیں تاآنکہ آپ گناہ نہ کریں۔ حج کرکے لوٹ آئیں تو آپ کی زندگی میں پوری طرح سے تبدیلی آجائے۔ اس تربیتی پروگرام کا آغاز تلاوت کلام پاک اور بارگاہ رسالت مآبؐ میں نعت شریف کا نذرانہ عقیدت سے ہوا۔ ریاض علی رضوی نے ابتدائی کلمات پیش کئے۔ پروگرام کی کارروائی مسعود علی اکبر نے چلائی۔ محمد فیاض علی، محمد تفضل حسین شیخ عثمان علی، عبدالرشید وغیرہ نے انتظامی اُمور میں حصہ لیا۔جناب خواجہ علیم الدین ناظم مدرسہ انوارالعلوم نے بھی خطاب کیا۔

TOPPOPULARRECENT