Wednesday , January 24 2018
Home / سیاسیات / کجریوال کی ایماء پرکمیٹی سے اخراج

کجریوال کی ایماء پرکمیٹی سے اخراج

نئی دہلی۔ 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پرشانت بھوشن نے آج کہا کہ انہیں اور یوگیندر یادو کو عام آدمی پارٹی کی سیاسی اُمور کمیٹی سے اروند کجریوال کی ایماء پر علیحدہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کے اعلیٰ سطح کے قائدین چاہتے تھے کہ فیصلہ ساز ادارہ پر ان کا غلبہ ہو، لیکن ان دونوں نے اس کی مخالفت کی تھی۔ نامور قانون داں ،کارکن اور عام آدمی پا

نئی دہلی۔ 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پرشانت بھوشن نے آج کہا کہ انہیں اور یوگیندر یادو کو عام آدمی پارٹی کی سیاسی اُمور کمیٹی سے اروند کجریوال کی ایماء پر علیحدہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کے اعلیٰ سطح کے قائدین چاہتے تھے کہ فیصلہ ساز ادارہ پر ان کا غلبہ ہو، لیکن ان دونوں نے اس کی مخالفت کی تھی۔ نامور قانون داں ،کارکن اور عام آدمی پارٹی کے بانی رکن نے کہا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ پارٹی اس کے بنیادی اصولوں اور نظریات پر کھری اُترے گی اور وہ یہ کوشش جاری رکھیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی شخص کیلئے ان حالات میں منصفانہ نتیجہ اخذ کرنا ممکن ہے۔ وہ ’’ہیڈلائینس ٹوڈے‘‘ کو انٹرویو دے رہے تھے۔ ان سے سوال کیا گیا تھا کہ انہیں اور یوگیندر یادو کو کمیٹی سے کیوں علیحدہ کیا گیا۔ بھوشن نے کہا کہ حالانکہ کجریوال ایک عظیم قائد ہیں اور ان میں کئی قابل ستائش خصوصیات ہیں لیکن وہ بعض سنگین خامیاں بھی رکھتے ہیں۔

ان میں سے ایک فیصلہ ساز شعبہ پر غلبہ حاصل کرنے کی بھی ہے۔ کجریوال کے اطراف جن افراد کا حلقہ ہے، وہ لوگ بھی میرے اور یادو کے خلاف ان کے کان بھرتے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی پارٹی کو 50 لاکھ روپئے کے عطیہ جات کی تحقیقات کروانی چاہئے جو مشتبہ کمپنیوں سے وصول ہوئے ہیں اور جن کو وہ حاصل نہیں کرسکی۔ انہوں نے کہا کہ اگر ان کے اندیشوں کا ازالہ نہیں کیا گیا تو وہ مستعفی ہوجائیں گے۔ اگر پارٹی اپنے بنیادی اُصولوں سے گمراہ ہوجائے اور اس کے اصلی اصولوں کے احیاء کا کوئی امکان باقی نہ رہے تو میں مستعفی ہونے پر مجبور ہوجاؤں گا اور اس کی وجوہات برسر عام بیان کرونگا۔ انہوں نے کہا کہ ان کے اور کجریوال کے درمیان مواصلاتی ربط ختم ہوچکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT