Sunday , June 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / کرسمس میں شریک نہ ہونے مسلمانوں کو تلقین

کرسمس میں شریک نہ ہونے مسلمانوں کو تلقین

میدک24دسمبر(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کرسمس کا تہوار مسلمانوں کا تہوار نہیں ہے بلکہ یہ تہوار عیسائیوں کا تہوار ہے۔اور ایک مسلمان کیلئے ضروری ہے کہ وہ دیگر ادیان ومذاہب کے تہواروں میں شرکت کرنے سے گریز کریں۔ان خیالات کا اظہار صدر میدک مسلم ویلفیر سوسائٹی مولانا محمد جاوید علی حسّامیؔنے ایک پریس نوٹ میں کیا۔مولانا نے اپنے پریس نوٹ میں کہا

میدک24دسمبر(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کرسمس کا تہوار مسلمانوں کا تہوار نہیں ہے بلکہ یہ تہوار عیسائیوں کا تہوار ہے۔اور ایک مسلمان کیلئے ضروری ہے کہ وہ دیگر ادیان ومذاہب کے تہواروں میں شرکت کرنے سے گریز کریں۔ان خیالات کا اظہار صدر میدک مسلم ویلفیر سوسائٹی مولانا محمد جاوید علی حسّامیؔنے ایک پریس نوٹ میں کیا۔مولانا نے اپنے پریس نوٹ میں کہاکہ عیسائیوں کے عقائد ہم مسلمانوں کے عقائد سے بالکل علٰحدہ ہیں کیونکہ وہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو اللہ تعالیٰ کا بیٹا مانتے ہیں حالانکہ اللہ رب العزت نے اپنی خلقت کے بارے میں قرآن ِ مجید میں یوں ارشاد فرمایا کہ لم یلد ولم یولد ،یعنی اللہ وہ ہے جو نہ تو کسی سے پیدا ہوا ہے اور نہ ہی اس سے کوئی پیدا ہوا ہے اور اللہ نے مزید یوں فرمایا کہ اس کا نہ تو کوئی بیٹا ہے اور نہ تواس کوئی باپ ہے۔مولانا محمد جاوید علی حسّامیؔ نے مزید کہاکہ اسلامی تعلیمات میں کسی قو م کی مشابہت اختیار کرنے سے احتیاط کرنے کا حکم دیتے ہوئے اللہ کے نبیﷺنے فرمایا کہ جو کوئی کسی قوم کی مشابہت اختیار کرے گا تو وہ ان ہی میں سے ہوجائیگا۔لہذا ہم مسلمانوں کو چاہئے کہ ہم غیروں کے تہوار میں شریک ہونے سے گریز کریں۔ مولانا نے مزید کہاکہ کرسمس عیسائیوں کا مذہبی تہوار ہے اور اس تہوار کو صرف عیسائی مناتے ہیں اور اس تہوار میں مسلمانوں کا کوئی کام نہیں ہوتا ہے ۔ہاں دین ِ اسلام میں ہر ایک کے جذبات کا اور ان کے تہواروں کا احترام کرنے کا درس دیا گیا ہے لیکن ان کے مذہبی تہواروں میں شریک ہوتے ہوئے ان کے برابر ہم اس تہوار کو نہیں منا سکتے ہیں۔مولانا محمد جاوید علی حسّامیؔ نے مزید کہاکہ پچھلے سالوں میں اکثر دیکھا یہ گیا کہ اکثر مسلمان بھی اس تہوار کے موقع پر گرجا گھروں کے اطراف واکناف کے مقامات پر لگائے جانے والے مختلف اقسام کے دکانوں میں خریدو فروخت ،اور وہاں پر لگائے جانے والے مختلف قسم کے میلوں میں شرکت کرتے ہیں۔لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اس تہوار کو اپنا تہوار نہ سمجھیں اور یہ بات خوب اچھی طرح ذہن نشین کرلیں کہ مسلمانوں کی عبادت گاہ مسجدیں ہیں نہ کوئی گرجا گھر ۔مولانا نے کہاکہ اس پیغام کو ہر ایک مسلمان تک پہونچاتے ہوئے اس تہوار میں شریک ہونے سے بچائیں۔اور ساتھ ہی ساتھ فتنہ عیسائیت سے ہماری مسلم قوم کو محفوظ رکھیں۔

TOPPOPULARRECENT