Saturday , June 23 2018
Home / سیاسیات / کرناٹک اسمبلی انتخابات میں آر ایس ایس سے مدد طلب

کرناٹک اسمبلی انتخابات میں آر ایس ایس سے مدد طلب

بی جے پی کے اعلیٰ سطحی قائدین یدی یورپا اور اننت کمار کا آر ایس ایس سے ربط
بنگلورو ۔ 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی قائدین بشمول بی ایس یدی یورپا اور مرکزی وزیر اننت کمار نے آر ایس ایس قائدین کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کیا تاکہ سنگھ پریوار کے آئندہ کرناٹک اسمبلی انتخابات کیلئے لائحہ عمل کا تعین کیا جائے۔ 3 مارچ کو سنگھ پریوار نے اپنی سالانہ رابطہ کمیٹی کا ریاستی ہیڈکوارٹرس پر اجلاس منعقد کیا۔ اہم بی جے پی قائدین بشمول یدی یورپا، اننت کمار، سدانندگوڑا اور دیگر نے اجلاس میں شرکت کی اور سنگھ سے ریاستی اسمبلی انتخابات کے دوران مدد فراہم کرنے کی درخواست کی۔ آر ایس ایس کے ایک سینئر قائد نے کہا کہ تاہم آر ایس ایس نے کہا کہ وہ راست طور پر بی جے پی کی مدد کیلئے انتخابی عمل میں ملوث نہیں ہوگی۔ تاہم اس نے آر ایس ایس کارکنوں کو اس بات کی آزادی دے دی ہیکہ وہ آئندہ اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی مدد کرسکتے ہیں۔ آر ایس ایس قائد نے کہا کہ یہ سویم سیوکوں کیلئے فطری بات ہیکہ وہ بی جے پی کی مدد کیلئے تیار رہیں۔ اس سوال پر کہ کیا آر ایس ایس نے بی جے پی سے خواہش کی ہیکہ دیگر پسماندہ طبقات اور دلتوں کے ووٹوں کو تقسیم کیا جائے جو چیف منسٹر کرناٹک کے عہدہ کیلئے سدارامیا کو ترجیح دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ایسی کوئی تجویز پیش نہیں کی ہے اور نہ بی جے پی نے ان خطوط پر ہم سے مدد طلب کی ہے۔ اس سوال پر کہ سویم سیوک بی جے پی کی کس طرح مدد کریں گے۔ آر ایس ایس قائد نے کہا کہ وہ عوام کی کثیر تعداد کو ترغیب دیں گے کہ وہ اپنے حق رائے دہی کا استعمال درست امیدوار کے انتخاب کیلئے کریں۔ اگر جمہوریت کو مستحکم کرنا ہے تو عوام کی کثیر تعداد کھل کر اپنے حق رائے دہی کا درست امیدواروں کے انتخاب کیلئے استعمال کرے گی۔ سویم سیوک اسی نوعیت کی انتخابی مہم چلائیں گے۔ علاوہ ازیں سویم سیوک دیگر سرگرمیوں میں بھی بی جے پی کی مدد کریں گے۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ مشکل ہیکہ انتخابی مہم میں شریک ہونے والے سویم سیوکوں کی تعداد کا انکشاف کیا جائے۔ تاہم ایک اندازہ کے مطابق 1000 سویم سیوک بی جے پی کی مدد کریں گے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بی جے پی کارکن جو سویم سیوک بھی ہیں، پہلے ہی سے اس سلسلہ میں اپنے کام کا آغاز کرچکے ہیں۔ حال ہی میں منعقدہ ایک اجلاس میں قومی صدر بی جے پی امیت شاہ نے مبینہ طور پر آر ایس ایس قائدین کو ان کے ہیڈکوارٹر ناگپور میں تیقن دیا ہیکہ بی جے پی کرناٹک اسمبلی انتخابات لازمی طور پر کامیابی حاصل کرے گی۔ آر ایس ایس کا ادعا ہیکہ وہ ایک غیرسیاسی اور سماجی فلاح و بہبود کی تنظیم ہے اور انتخابی عمل میں کسی حالت میں اس کا کوئی حصہ نہیں ہوتا۔ تاہم یہ بات بھی ہر شخص جانتا ہیکہ آر ایس ایس ہمیشہ بی جے پی کی انتخابی کامیابی کیلئے بالواسطہ طور پر سرگرم رہتی ہے اور اس کے سویم سیوک بی جے پی کارکنوں کی حیثیت سے ہر انتخابات میں چاہے وہ کسی ریاست کے ہوں یا پارلیمنٹ کے اپنا کردار ادا کیا کرتے ہیں۔ ان انتخابات میں بھی جہاں ایگزٹ پولس نے بی جے پی شکست کی پیش قیاسیاں کی تھیں، حیرت انگیز طور پر بی جے پی نے کامیابی حاصل کی۔ اس کیلئے اپوزیشن برقی رائے دہی مشینوں کی غلط کارکردگی کو موردالزام قرار دے رہے ہیں اور پرانی مشینوں کے استعمال کا مطالبہ کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT