Sunday , December 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کرناٹک اقلیتی بہبود کی اسکیمات ملک کیلئے قابل تقلید

کرناٹک اقلیتی بہبود کی اسکیمات ملک کیلئے قابل تقلید

گلبرگہ میں وزارت اقلیتی بہبود کی خدمات کا کتابچہ جاری ، قمرالاسلام کی خدمات کو خراج تحسین
گلبرگہ۔26مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) چیف منسٹر کرناٹک مسٹر سدارامیا نے اپنی حکومت کے اقتدار کے تین برسوںمیں عوام کے لئے نامزدکی گئی اسکیمات کے استفادہ کنندگان سے رابطہ کے ذریعہ ان سے حاصل فائدوں اور دیگر تفصیلات سے آگہی کاپروگرام بنایا تھا۔ یہ انکشاف ڈاکٹر قمر الاسلام وزیر اقلیتی بہبود، بلدی نظم ونسق، پبلک انٹرپرائزس ، وقف و ضلع انچارج وزیر گلبرگہ نے انجمن محبان قمر الاسلام ،گلبرگہ کے زیر اہتمام ہفت گنبد میدان، گلبرگہ میں وزارت اقلیتی بہبود کی تین سالہ کار کردگی پر مشتمل ایک کتابچہ کی رسم اجراء انجام دینے کے بعد عوام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جناب قمر الاسلام نے کہا کہ مختلف وزارتوں کی جانب سے بھی اپنی تین سالہ کارکردگی پر مشتمل اس طرح کے کتابچے شائع کئے گئے ہیں تاکہ عوام ان سے آسانی سے استفادہ کرسکیں ۔ ان کتابچوں میںمختلف محکمہ جات کی کار کردگی اور ان سے استفادہ کے ضمن میں اہم نکات پیش کئے گئے ہیں ۔ انھوں نے بتایا کہ ان کے محکمہ کے تحت 9ادارہ جات کارکرد ہیں ۔ جن میں وقف بورڈ ، اقلیتی بہبود سیکریٹریٹ کارپوریشن، کرناٹک اسٹیٹ حج، کرناٹک اردواکیڈمی، وقف کونسل، وقف فائونڈیشن وغیرہ شامل ہیں۔ جناب قمر الاسلام نے کہا کہ ہندوستان میں پہلی بار انھوں نے ائمہ کرام اور موذنین کے لئے ماہانہ ہدیہ جاری کروایا ۔ حکومت کرناٹک اس طرح ریاست کے 14تا15ہزار ائمہ و موذن حضرات کو ان ماہانہ ہدایہ جات سے مستفید کررہی ہے ۔ انھوں نے کہا ک حالیہ بجٹ میں اس مقصد کے لئے 15کروڑ روپئے مختص کئے گئے ہیں۔ ملک بھر میں 8لاکھ 85ہزار مساجد ہیں ۔ ان مساجد کے ائمہ حضرات اور موذن حضرات کا احترام بھی ہمارے ذمہ ہے ۔ انھوں نے نہایت دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ائمہ حضرات کو اپنی بچیوں کی شادیوں  اور ان کے داخلوںکے لئے دوسروں کے آگے ہاتھ پھیلانے کے لئے مجبور نہ ہوں ۔ انھوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے بدائی اسکیم کے تحت غریب لڑکیوں کو ان کی شادی کے لئے 50پزار روپئے فی کس دئے جاتے ہیں ۔ اب اس طرح کی 14130لڑکیوںکی شادیوںکے لئے مالی امداد دی گئی ہے ۔ انھوں نے کہا کہ محکمہ اقلیتی بہبود کے بضمن 451.93کروڑ روپیوں میں گزشتہ تین برسوں ی 300گنا اضافہ کیا گیا ہے۔ اور اب سال 2016-17کے لئے 1443.37کروڑ روپئے مختص کئے گئے ہیں جس میں مرکزی و ریاستی بجٹ شامل ہے۔

اس طرح اقلیتی ویلفیر ڈائریکٹوریٹ کے لئے 433.28کروڑ روپیوں  جو بجٹ تھا گزشتہ تین برسوں میں اس میں بتدریج اضافہ کرکے اسے 2016.17میں 1138.78کروڑ روپئے کردیا گیا ہے ۔ حکومت ہند جاری اسکیم کے تحت عدم استفادہ کی صورت میں ریاستی حکومت کی جانب سے 6064لاکھ اسکالر شپس کو بڑھا کر اب 2015-16میں 682, 867لاکھ  روپئے کردی گئی ہے۔ جبکہ نیشنل اوور سیز اسکالر شپ کے تحت بیرون ملک زیرتعلیم طلبا کے لئے رقم 10لاکھ روپیوں سے بڑھا کر 20لاکھ روپئے فی کس کردی گئی ہے۔ اس اسکیم سے اب تک 346طلبا نے استفادہ کیا ہے ۔ ریاست میں اقلیتی ہاسٹلوں میں 14975طلبا رہائش پذیر ہیں ۔ جب کہ اقامتی مدارس اور کالج سے 16250طلبا کو فائدہ پہنچ رہا ہے  جو 82 مدارس اور کالجوں میں زیر تعلیم ہیں ۔ اس موقع پر صدر نشین گلبرگہ ڈیولپمنٹ اتھارٹی ممتاز عوامی قائد جناب ڈاکٹر محمد اصغر چلبل نے کہا کہ الحاج قمر الاسلام نے پہلی مرتبہ سرکار سطح پر حکوت کی اسکیمات کو روشناس کرنے کے لئے اردو زبان میں ایک کتابچہ جاری کرنے کا ریکارڈ قائم کیا ہے ۔ قبل ازیں ان کی تجاویز پر اردو میں ووٹرس لسٹ اور اور کارپوریشن کی روئیداد بھی اردو میں جاری ہوتی رہی ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ الحاج قمر الاسلام عوام کے ہر دلعزیز قائد ہیں ۔ انھوں نے بتایا کہ 2008میں تمام مخالف جماعتوں کے اتحاد کے باوجود عوام نے انھیں بھاری اکثریت سے کامیاب کیا تھا۔اس موقع پر پروفیسر عبدالحمید اکبر شعبہ اردو و فارسی ، گلبرگہ یونیورسٹی نے کہا کہ قوم کی قیادت اور رہنمائی کیلئے درکار تمام اوصاف حمیدہ جناب قمر السلام کی شخصیت میں بدرجہ اتم موجود ہیں  ۔ انھوں نے ائمہ کرام و موذنین کے وظائف اور غریب لڑکیوں کی شادی و اعلی تعلیم کے لئے اندرون ملک و بیرون ملک حکومت کی جانب سے بھرپور امداد پر انھیں مبارک باد پیش کی ۔اس موقع پر سردار امرتیہ پٹیل، فضل پٹیل، لعل احمد ممبئی سیٹھ، مولانا شریف احمد مظاہری، قاضی رضوان احمد مشہود، انجینئر افضال محمود، عبدالقادر انجینئر ،سجاد علی انعامدارسابق ڈپٹی مئیر، عبدالرحیم کارپوریٹرنے بھی اظہار خیال کیا۔ ممتاز نعت خواں ساجد نظامی نے نعت شریف پیش کی ۔ اس موقع پر جناب اسد علی انصاری ، عبدالقدیر چونگے، محمد زاہدعلی سابق مئیر، الیاس احمد باغبان صدر نیشنل ایجوکیشن سوسائٹی ،نذیر احمد استاد وغیرہ سند پر موجود تھے ۔ عوام الناس کی کثیر تعدادجلسہ میں شریک تھی ۔ جلسہ کی کارروائی  جناب عزیز اللہ سرمست نے چلائی۔

TOPPOPULARRECENT