Tuesday , July 17 2018
Home / شہر کی خبریں / کرناٹک میں دستور کا خون کرنے کے خلاف تلنگانہ یوتھ کانگریس کا احتجاج

کرناٹک میں دستور کا خون کرنے کے خلاف تلنگانہ یوتھ کانگریس کا احتجاج

حیدرآباد ۔ 17 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ یوتھ کانگریس کی جانب سے کرناٹک میں دستور کا خون کرنے کے خلاف نامپلی پر بطور احتجاج وزیراعظم مودی کا پتلا نذر آتش کیا گیا ۔ بی جے پی آفس کے گھیراؤ کی کوشش کرنے والے سابق پارلیمنٹ انجن کمار یادو کے علاوہ دوسرے قائدین کو گرفتار کرلیا گیا ۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی کی ہدایت پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی نے ریاست کے تمام اضلاع ہیڈکوارٹرس پر کرناٹک میں دستور کا خون کرتے ہوئے بی جے پی کو حکومت تشکیل دینے کا موقع فراہم کرنے کے خلاف احتجاج منظم کرنے کی اپیل کی ۔ صدر تلنگانہ یوتھ کانگریس انیل کمار یادو کی زیر قیادت آج گاندھی بھون کے روبرو کانگریس کارکنوں نے احتجاجی دھرنا منظم کیا اور وزیراعظم نریندر مودی کا مجسمہ بھی نذر آتش کیا ۔ اس موقع پر سابق رکن پارلیمنٹ انجن کمار یادو ، صدر گریٹر حیدرآباد کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ شیخ عبداللہ سہیل کے علاوہ دوسرے قائدین اور یوتھ کانگریس کے قائدین موجود تھے ۔ انجن کمار یادو نے کہا کہ نریندر مودی کے وزیراعظم بن جانے کے بعد دستوری فرائض کی خلاف ورزی کی جارہی ہے ۔ منی پور ۔ میگھالیہ اور گوا میں ایک رول اپنایا گیا اور کرناٹک میں دوسرا رول اپنایا جارہا ہے ۔ کرناٹک میں بی جے پی واحد بڑی جماعت بن کر ابھری ہے ۔ مگر تشکیل حکومت کے لیے بی جے پی کے پاس اکثریت نہیں ہے ۔ جب کہ کانگریس اور جے ڈی ایس کے پاس مکمل اکثریت ہے ۔ گورنر نے بی جے پی کو تشکیل حکومت فراہم کرنے کا موقع فراہم کرتے ہوئے ارکان اسمبلی کی خرید و فروخت کی حوصلہ افزائی کی ہے ۔ جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے ۔ سیاسی مفادات کے لیے فرقہ وارانہ کارڈ کھیلنے والی بی جے پی دستوری امور میں بھی مداخلت کرتے ہوئے دستوری اصولوں اور روایت کو داغدار بنایا جارہا ہے جس کی بی جے پی کو قیمت چکانی پڑے گی ۔ گاندھی بھون سے بی جے پی آفس کا گھیراؤ کرنے کے لیے روانہ ہونے والے کانگریس قائدین کو پولیس نے حراست میں لیتے ہوئے بیگم بازار پولیس اسٹیشن منتقل کردیا گیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT