Thursday , June 21 2018
Home / Top Stories / کرناٹک میں مسلم ڈپٹی چیف منسٹر ہوگا

کرناٹک میں مسلم ڈپٹی چیف منسٹر ہوگا

دو ڈپٹی چیف منسٹر س کی تجویز، جے ڈی ایس کی جانب سے مسلم نام پیش

بنگلور ۔ /20 مئی (سیاست ڈاٹ کام) کرناٹک میں حکومت کی تشکیل کو لے کر جے ڈی ایس اور کانگریس کے درمیان تبادلہ خیال جاری ہے ۔ ذرائع کے مطابق دونوں پارٹیوں میں وزارتوں کی تقسیم پر غور و خوص کیا گیا ۔ جے ڈی ایس لیڈر کمارا سوامی چہارشنبہ کو وزیر اعلیٰ کے عہدہ کا حلف لیں گے ۔ وہیں ذرائع کے مطابق کمارا سوامی کے ساتھ کانگریس کے 20-17 وزراء جبکہ جے ڈی ایس کے 10 سے 13 وزراء حلف لے سکتے ہیں ۔ ذرائع کے مطابق اس میٹنگ میں ڈپٹی چیف منسٹرس کے نام پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں دو وزرائے اعلیٰ بنائے جاسکتے ہیں ۔ کانگریس کی طرف سے ریاستی صدر جی پرمیشور کے علاوہ ریاست میں گزشتہ دنوں ہوئی سیاسی رسہ کشی کے دوران پارٹی کے سنکٹ موچک رہے ڈی کے شیوکمار کا نام اس عہدہ کیلئے آگے بڑھایا جارہا ہے ۔ وہیں جے ڈی ایس کسی مسلمان کو نائب وزیر اعلیٰ بنانا چاہ رہی ہے ۔ اس کے علاوہ کانگریس لیڈر اور ریاست کے سب سے سینئر ممبر اسمبلی ڈی وی دیش پانڈے کو اسمبلی اسپیکر کاعہدہ بھی دیا جاسکتا ہے ۔

گورنر کرناٹک سے استعفی کا مطالبہ : شردپوار
ممبئی ۔ /20 مئی (سیاست ڈاٹ کام) این سی پی سربراہ شردپوار اور شیوسینا نے ہفتہ کو کہا کہ کرناٹک میں تین دن کی بی ایس یدی یورپا حکومت کے اسمبلی میں اہم طاقت آزمائی سے قبل گرجانے کے بعد ریاست کے گورنر وجو بھائی والا کو استعفیٰ دے دینا چاہئیے ۔ پوار نے کہا کہ گورنر کے قدم نے جمہوریت کونقصان پہنچایا ہے ۔ کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا نے آج کرناٹک اسمبلی میں متعینہ طاقت آزمائی کا سامنا کرنے کی بجائے استعفیٰ دے دیا ۔ شیوسینا ممبر پارلیمنٹ سنجے راوت نے کہا کہ یدی یورپا کا استعفی تانا شاہی اور تکبر کے خاتمہ کا آغاز ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کرناٹک میں جو ہوا وہ جمہوریت کیخلاف ہے ۔ یہ خراب سوچ اور ذہنیت کاخاتمہ ہے ۔ جس میں ماننا ہے کہ کسی بھی طریقے سے الیکشن جیتے جاسکتے ہیں اور سرکاریں بنائی جاسکتی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT