Tuesday , December 18 2018

کرناٹک میں کانگریس کو اکثریت ملنے کا یقین : ویرپا موئیلی

موجودہ دور کے ایگزٹ پولس ٹی وی چینلس کی وابستگیوں کے عکاس : سینئر لیڈر کا ادعا

حیدرآباد 14 مئی ( پی ٹی آئی ) کرناٹک انتخابات میں معلق اسمبلی یا پھر بی جے پی کو سبقت دکھانے والے ایگزٹ پولس کو مسترد کرتے ہوئے سینئر کانگریس لیڈر ایم ویرپا موئیلی نے آج ادعا کیا کہ ان کی پارٹی کو ریاست میں سادہ اکثریت حاصل ہوجائے گی ۔ ویرپا موئیلی نے کرناٹک اسمبلی انتخابات کے نتائج کے اعلان سے ایک دن قبل آج پی ٹی آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگر عوام نے کارکردگی کی بنیاد پر ووٹ دیا ہے تو پھر وہ سمجھتے ہیں کہ کانگریس کو اکثریت مل جانی چاہئے ۔ وہ سمجھتے ہیں کہ زیادہ امکان یہی ہے کہ کانگریس کو کم از کم سادہ اکثریت ضرور حاصل ہوجائے گی ۔ اگر کانگریس سادہ اکثریت حاصل کرنے میں ناکام ہوجائے تو اس کے سامنے موجود امکانات سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے سابق چیف منسٹر کرناٹک نے کہا کہ کل نتائج کے اعلان کے بعد ہی اس تعلق سے کچھ کہا جاسکتا ہے ۔ ویرپا موئیلی نے کہا کہ پہلے ایگزٹ پولس وغیرہ ماہرین اور پیشہ ور افراد کیا کرتے تھے لیکن آج کل یہ اگزٹ پولس ٹی وی چینلس کے مالکین کی سوچ سے متاثر ہوکر تیار کئے جاتے ہیں۔ اس سوال پر کہ آیاکانگریس پارٹی سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڑا کی جے ڈی ایس کے ساتھ اتحاد کرسکتی ہے ویرپا مویلی نے کہا کہ وہ اس پر کوئی تبصرہ نہیں کرنا چاہتے کیونکہ ان کا یہ یقین ہے کہ کانگریس پارٹی کو اپنے طور پر سادہ اکثریت حاصل ہوجائے گی ۔ ایگزٹ پولس میں یہ اشارہ دیا گیا ہے کہ ریاست میں معلق اسمبلی کی تشکیل کی صورت میں جے ڈی ایس کو اہم مقام مل سکتا ہے ۔ انہوںن ے واضح کیا کہ کانگریس نے انتخابی مہم کے دوران مثبت انداز اختیار کیا تھا جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اس کے برخلاف منفی مہم چلائی ہے۔ انہوں نے کانگریس قائدین پر شخصی حملے کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر منفی مہم کے بی جے پی کیلئے مثبت نتائج ہوسکتے ہیں تو پھر اس ملک کو خدا ہی بچاسکتا ہے ۔ کرناٹک کو سکیولر سرزمین قرار دیتے ہوئے سابق مرکزی وزیر نے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ بی جے پی کو ریاست میں کوئی حقیقی اور فطری ترقی مل سکتی ہے ۔ ویرپا موئیلی نے چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا کے اس ریمارک پر تبصرہ کرنے سے انکار کردیا کہ اگر ریاست میں کسی دلت کو چیف منسٹر بنایا جاتا ہے تو وہ اس کی مخالفت نہیں کرینگے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ نہیں جانتے کہ سدارامیا نے یہ ریمارک کیوں کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT