Monday , October 22 2018
Home / Top Stories / کرناٹک کے لوک آیوکت کو دفتر میں چاقو گھونپ دیا گیا

کرناٹک کے لوک آیوکت کو دفتر میں چاقو گھونپ دیا گیا

چیف منسٹر سدارامیا نے وشواناتھ شٹی کی عیادت کی ،حملہ آور ایڈوکیٹ گرفتار

بنگلور ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کرناٹک کے لوک آیوکت پی وشواناتھ شٹی کو آج ان کے دفتر میں ملاقات کیلئے پہنچنے والے ایک شخص نے چاقو سے کئی وار کرتے ہوئے شدید زخمی کردیا، جس کے بعد انہیں دواخانہ منتقل کردیا گیا جہاں ان کی حالت خطرہ سے باہر بتائی گئی ہے۔ کرناٹک کے وزیرداخلہ راما لنگاریڈی نے پی ٹی آئی سے کہاکہ ملزم کسی مقدمہ کے ضمن میں لوک آیوکت کے روبرو حاضر ہوا تھا۔ حملہ کرنے کے بعد اس کو پکڑ لیا گیا ہے۔ ریڈی نے مزید کہا کہ ’’مجھے دستیاب معلومات کے مطابق کسی نے خود کے وکیل ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے دفتر میں پہنچا اور انہیں (لوک آیوکت کو) چاقو گھونپ دیا۔ لوک آیوکت وشواناتھ شٹی جو کرناٹک ہائی کورٹ کے سابق جج ہیں، دواخانہ میں ان کی حالت خطرہ سے باہر بتائی گئی ہے۔ رامالنگاریڈی نے کہا کہ ’’وہ (شٹی) ملیا ہاسپٹل میں ہیں… مجھے معلوم ہوا ہیکہ وہ خطرہ سے باہر ہیں۔ اس (حملے) کی وجہ معلوم نہیں ہوئی ہے۔ بیان کیا جاتاہیکہ لوک آیوکت کے رجسٹر میں درج تفصیلات کے مطابق حملہ آور تیجاس شرما ایک وکیل ہے اور ایک شکایت درج کروانے کے بہانے وہاں پہنچا تھا۔ اس موقع پر آپ لوک آیوکت سبھاش بی آدی دفتر میں موجود نہیں تھے۔ اس دوران چیف منسٹر سدارامیا نے اپنے کابینی رفقائ، رامالنگاریڈی، کے جے جارج، ایم بی پاٹل اور سینئر پولیس افسران کے ساتھ دواخانہ پہنچ کر لوک آیوکت کی عیادت کی۔ بعدازاں دواخانہ کے باہر اخباری نمائندوں سے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہیکہ حملہ آور غالباً شٹی کو ہلاک کرنے کے ارادہ سے ان کے چیمبرس میں پہنچا تھا۔ ریاستی بی جے پی کے صدر یدی یورپا نے اس واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے ریاست میں امن و قانون کی ابتر صورتحال کو موردالزام ٹھہرایا۔ بی جے پی لیڈر اور سابق وزیرداخلہ آر اشوک نے کرناٹک میں صدر راج کے نفاذ کا مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT