Saturday , January 20 2018
Home / دنیا / کریمیا بحران : امریکہ اور روس کی ایک دوسرے کیخلاف نئی پابندیاں

کریمیا بحران : امریکہ اور روس کی ایک دوسرے کیخلاف نئی پابندیاں

واشنگٹن؍ ماسکو، 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر براک اوباما نے روس کے خلاف کریمیا میں جاری بحران کی بنا پر عائد کی جانے والی پابندیوں کو وسعت دیتے ہوئے مزید بیس روسی شخصیات اور ان کے زیراستعمال ایک بینک پر پابندیاں عائد کردی ہیں جبکہ روس نے بھی اس کے ردعمل میں بعض امریکی شخصیات کے ملک میں داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔ صدر اوباما نے

واشنگٹن؍ ماسکو، 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر براک اوباما نے روس کے خلاف کریمیا میں جاری بحران کی بنا پر عائد کی جانے والی پابندیوں کو وسعت دیتے ہوئے مزید بیس روسی شخصیات اور ان کے زیراستعمال ایک بینک پر پابندیاں عائد کردی ہیں جبکہ روس نے بھی اس کے ردعمل میں بعض امریکی شخصیات کے ملک میں داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔ صدر اوباما نے جمعرات کو ایک انتظامی حکم نامہ پر دستخط کئے ہیں جس کے تحت امریکہ روسی معیشت کے اہم شعبوں پر پابندیاں عائد کرسکے گا۔انھوں نے یوکرین میں فوجی مداخلت کے الزام میں روس کے خلاف مزید اقدامات کی بھی دھمکی دی۔

امریکی صدر نے کہا کہ روسی حکومت کے اختیار کردہ راستہ کے نتیجے میں یہ پابندیاں عائد کی گئی ہیں کیونکہ اس روسی پسند کو عالمی برادری نے مسترد کردیا ہے۔ قبل ازیں امریکہ نے یوکرین تنازعے میں ملوث ہونے کے الزام میں گیارہ روسی شخصیات پر پابندیاں عائد کئے تھے جن کے تحت ان کے امریکہ میں اثاثے منجمد کر لئے گئے اور امریکہ میں داخلے پر پابندی عائد کی گئی۔ روس نے تین ہفتے قبل اپنی فوجیں کریمیا میں داخل کی تھیں اور وہاں گزشتہ اتوار کو ریفرینڈم کے انعقاد کے بعد اس کو ضم کر لیا لیکن امریکہ نے کریمیا میں روسی مداخلت کو بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی قراردیا اور اس کے روس کے ساتھ الحاق کو تسلیم نہیں کیا۔

٭ دریں اثناء روس نے امریکہ کی پابندیوں کے ردعمل میں نو امریکی شخصیات کو ناپسندیدہ قرار دیا ہے اور ملک میں ان کے داخلے پر پابندی لگا دی ہے۔روسی پابندیوں کی زد میں آنے والی امریکی شخصیات میں سینیٹ کے قائد ایوان ہیری ریڈ، ایوان نمائندگان کے اسپیکر جان بوئنر،سینیٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے چئیرمین رابرٹ مینیڈیز،تین سینیٹرز جان مکین ،میری لانڈریو اور ڈینیل کوٹس اور صدر براک اوباما کے تین مشیران کیرولین اٹکنسن، ڈینیل فیفر اور بنجمن روڈز شامل ہیں۔ ماسکو میں روسی وزارت خارجہ نے کہا کہ اس بات میں کسی کو شک نہیں ہونا چاہئے کہ ہر مخالفانہ حملے کا مناسب انداز میں جواب دیا جائے گا۔

کریمیا تنازعہ، یورپی یونین کی
روس پر مزید پابندیاں
برسلز، 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) یورپی یونین نے روس اور یوکرین کے مزید اعلیٰ حکام کو کریمیا تنازعے میں ملوث قرار دیتے ہوئے ان پر پابندیاں عائد کرنے پر اتفاق کرلیا ہے۔ جمعرات کو یہاں یورپی یونین کی سمٹ کے پہلے دن تمام رکن ممالک نے متفقہ طور پر روس اور یوکرین کی مزید بارہ اعلیٰ شخصیتوں پر ویزا پابندیوں کے علاوہ ان کے اثاثے منجمد کر دینے پر اتفاق کیا ہے۔ جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے خبردار کیا ہے کہ روس کریمیا کے بعد یوکرین کے مزید علاقوں کی طرف پیش قدمی کرتا ہے تو تجارتی اور مالیاتی پابندیاں بھی عائد ہو سکتی ہیں۔ انہوں نے صدر یورپی کمیشن یوزے مانوئل باروسو سے کہا کہ وہ روس کے خلاف تیسرے راؤنڈ کی پابندیاں عائد کرنے کا ابتدائی کام شروع کردیں۔ اب یونین کی طرف سے مجموعی طور پر 33 افراد پر پابندیاں عائد کرنے پر فیصلہ ہو چکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT