Monday , June 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / کسی جماعت کی نمائندگی پر نہیں، چیف منسٹر کی اقلیت دوستی کا نتیجہ

کسی جماعت کی نمائندگی پر نہیں، چیف منسٹر کی اقلیت دوستی کا نتیجہ

مسلمانوں کیلئے ترقیاتی اسکیمات
بے روزگار نوجوانوں کو قرض فراہمی کا تیقن ، بھینسہ میں چیرمین میناریٹی فینانس کارپوریشن سیداکبر حسین کا خطاب

بھینسہ۔/11 اپریل، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ٹی آر ایس دور حکومت میں مسلمانوں کو مختلف اسکیمات کے ذریعہ ترقی کی جانب گامزن کرتے ہوئے پسماندگی کا خاتمہ کیا جارہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار تلنگانہ اقلیتی مالیتی کارپوریشن چیرمین سید اکبر حسین نے پہلی مرتبہ بھینسہ شہر میں دورہ کرتے ہوئے تلنگانہ حکومت کی جانب سے مسلم خواتین میں منظورہ سلائی مشینوں کی تقسیم تقریب سے مخاطب کرنے کے دوران شہر کے ڈیسنٹ فنکشن ہال میں کیا۔ سید اکبر حسین نے کہا کہ ریاست کے مسلمانوں کی ترقی کیلئے فراہم کی جانے والی اسکیمات کسی ایک جماعت یا جماعت کے قائدین کی نمائندگی پر نہیں کئے جارہے ہیں بلکہ وزیر اعلیٰ تلنگانہ اپنی سیکولر ذہنیت اور قائدانہ صلاحیتوں کی بنیاد پر انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ سب تلنگانہ کے مسلمانوں کی ترقی اور سہولیات کیلئے کارناموں کو انجام دیا جارہا ہے نہ کہ کسی جماعت یا جماعت کے قائدین کی نمائندگی پر انجام دیا جارہا ہے۔ آخر میں انہوں نے تمام تعلقہ کی عوام سے خواہش کی ہے کہ رکن اسمبلی جی وٹھل ریڈی جیسی شخصیت کو آئندہ بھی قیادت کیلئے منتخب کریں اور انہوں نے تمام مستحق مسلم خواتین سے سلائی مشین حاصل کرتے ہوئے استفادہ کرنے کی خواہش کی۔ آئندہ بھی بھینسہ شہر و ڈیویژن کے اقلیتوں کیلئے روزگار اسکیم کے تحت خواتین کیلئے مفت تربیتی سنٹر قائم کرتے ہوئے سلائی مشین، کمپیوٹر اور بیوٹی پارلر کی تربیت فراہم کرنے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے بے روزگار نوجوانوں کو اقلیتی قرضہ جات کی فراہمی عمل میں لانے کا تیقن دیا۔ قبل ازیں خطاب میں رکن اسمبلی مدہول جی وٹھل ریڈی نے کہا کہ تعلقہ کے 130 مستحق خواتین میں سلائی مشینوں کی منظوری عمل میں آئی ہے۔ آئندہ مزید درخواست گذار خواتین میں مزید سلائی مشینوں کی منظوری عمل میں لانے کا تیقن دیا اور مشین حاصل کرنے والی خواتین کو استفادہ کرتے ہوئے خود مکتفی بننے کا مشورہ دیا۔اعجاز احمد خان سابق نائب چیرمین بلدیہ نے رکن اسمبلی وٹھل ریڈی اور اقلیتی مالیاتی کارپوریشن چیرمین اکبرحسین کو متوجہ کرتے ہوئے مخاطب ہوکر کہا کہ حکومت کی جانب سے اسکیمات کو روبہ عمل لایا جارہا ہے جو کہ قابل ستائش ہے لیکن بھینسہ شہر میں مستحق افراد تک اسکیمات فراہم نہیں کی جارہی ہیں بلکہ مخصوص افراد اور مقامی قائدین کے رشتہ داروں اور دوست احباب تک ہی ان اسکیمات کو محدود کردیا جارہا ہے جس کی وجہ سے مستحق افراد حکومت کی اسکیمات سے محروم ہوکر مجبوری کی زندگی گذار رہے ہیں۔ اعجاز احمد خان نے آئندہ اسکیمات کو مستحق افراد کی نشاندہی کرتے ہوئے فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ علاوہ ازیں ٹی آر ایس مقامی قائدین عبدالاحد، فاروق احمد صدیقی، جی سینو نمائندہ چیرمین زرعی مارکٹ کمیٹی کے علاوہ محمد منہاج الحق عادل نے حکومت کی مسلم اسکیمات کی ستائش کی۔ اس دوران اقلیتی مالیاتی کارپوریشن چیرمین سید اکبر حسین کی پہلی مرتبہ بھینسہ آمد پر زبردست شال پوشی و گلپوشی کرتے ہوئے تہنیت کے ذریعہ والہانہ انداز میں خیرمقدم کیا گیا۔ بعد ازاں بھینسہ میں منظورہ مستحق خواتین میں سلائی مشینوں کی تقسیم عمل میں لائی گئی۔ اس تقریب کی کارروائی فاروق احمد صدیقی نائب صدر ٹاون ٹی آر ایس نے بخوبی انجام دی۔ اس تقریب میں ٹی آر ایس مقامی قائدین شیخ منیر قریشی، رشید قریشی، قاسم بھنڈاری، عبدالواسع رسول، کرشنا، سید آصف، عبدالرافع کے علاوہ صفا بیت المال کے مقامی صدر حافظ منیر الدین و دیگر کی کثیر تعداد موجود تھی۔ سید اکبر حسین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن چیرمین کی پہلی مرتبہ بھینسہ آمد پر رکن اسمبلی جی وٹھل ریڈی کی قیادت میں مقامی ٹی آر ایس قائدین کی جانب سے بھینسہ ڈاک بنگلہ پر زبردست استقبال کرتے ہوئے ناشتہ کا اہتمام کیا گیا تھا اور ٹی آر ایس مقامی قائدین اور سید اکبر حسین کے درمیان مختلف امور پر تبادلہ خیال ہوا۔ اقلیتی مالیاتی کارپوریشن چیرمین سید اکبر حسین کی آمد پر بھینسہ پولیس کی جانب سے بندوبست انتظامات کئے گئے تھے۔ سید اکبر حسین نے روانگی کے دوران رکن اسمبلی جی وٹھل ریڈی کے ہمراہ شہر کے اردو لائبریری کا بھی دورہ کرتے ہوئے مکمل معائنہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT