Tuesday , January 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / کسی کھلاڑی کو آرام دینا آخری متبادل : دھونی

کسی کھلاڑی کو آرام دینا آخری متبادل : دھونی

آکلینڈ ، 12 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کپتان مہیندر سنگھ دھونی کا ماننا ہے کہ وہ جاریہ آئی سی سی ورلڈ کپ میں ٹیم کے اگلے و آخری میچ میں ہفتہ کو زمبابوے کے خلاف اپنے قطعی گیارہ (XI) میں کوئی بھی تبدیلی کرنے کے حق میں نہیں ہیں، حالانکہ ہندوستان کا کوارٹرفائنل مقام طئے ہوچکا ہے، سوائے اس کے کہ کوئی کھلاڑی کچھ سنگین انجری سے دوچار ہوجائ

آکلینڈ ، 12 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کپتان مہیندر سنگھ دھونی کا ماننا ہے کہ وہ جاریہ آئی سی سی ورلڈ کپ میں ٹیم کے اگلے و آخری میچ میں ہفتہ کو زمبابوے کے خلاف اپنے قطعی گیارہ (XI) میں کوئی بھی تبدیلی کرنے کے حق میں نہیں ہیں، حالانکہ ہندوستان کا کوارٹرفائنل مقام طئے ہوچکا ہے، سوائے اس کے کہ کوئی کھلاڑی کچھ سنگین انجری سے دوچار ہوجائے۔ اگر اس معاملے میں دھونی کے فلسفہ پر بھروسہ کریں تو ایسا لگتا ہے کہ امباٹی رائیڈو، اکشر پٹیل، اسٹوارٹ بنّی اور بھونیشور کمار کو متواتر جیتنے والی ٹیم کے قطعی گیارہ کھلاڑیوں میں جگہ پانے میں دقت پیش آئے گی۔ بھونیشور نے اگرچہ محمد سمیع کی غیرحاضری میں ایک میچ کھیلا، لیکن وہ بلاشبہ موجودہ تین ترجیحی بولروں اومیش یادو، سمیع اور موہت شرما سے کچھ کمتر ہیں۔ حتیٰ کہ دھونی نے واضح کردیا کہ وہ اپنے ریگولر کھلاڑیوں میں سے کسی کو آرام دیتے ہوئے اسکواڈ کے دیگر ارکان کو موقع دینے کے موڈ میں نہیں ہیں۔ انھوں نے پرتھ میں ویسٹ انڈیز کے خلاف اپنے میچ کے بعد صاف طور پر کہہ دیا تھا:

’’بنچ اسٹرینتھ (اسکواڈ کے محفوظ کھلاڑی) مزید اسی طرح رہیں گے۔‘‘ ہیملٹن میں آئرلینڈ میچ کے بعد ہندوستانی کپتان نے کچھ تفصیل سے وضاحت کی کہ کیوں وہ غیراہم میچ میں بھی قطعی گیارہ کے معاملے میں تجربوں کے حامی نہیں ہیں۔ یہ پوچھنے پر کہ آیا کھلاڑیوں کو آرام دینے کا کوئی خیال آرہا ہے، دھونی نے کہا: ’’اس معاملے میں ہم فزیو کی رائے پر انحصار کرتے ہیں۔ اگر فزیو کے خیال میں کسی کھلاڑی کو شدید زخمی ہوجانے کا خطرہ ہو تو ہم ایسی صورتحال میں اسے آرام دیں گے۔ بصورت دیگر، اگر ہر کوئی فٹ اور سلیکشن کیلئے دستیاب ہو تو ہم بہترین گیارہ کھلاڑیوں کے ساتھ ہی میدان سنبھالیں گے۔‘‘

TOPPOPULARRECENT