کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری پر پی ڈی پی ۔ بی جے پی تازہ تنازعہ

جموں۔ 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی محمد سعید نے کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کے سلسلے میں کہا کہ صرف 10 تا 15 فیصد کشمیری پنڈت وادی کشمیر کو واپس آنا پسند کریں گے، کیونکہ ان کی اکثریت وادی سے باہر اپنے قدم جما چکی ہے۔ دریں اثناء پی ڈی پی اور بی جے پی کی مخلوط حکومت میں بازآبادکاری کے مسئلہ پر تازہ تنازعہ پیدا ہوگیا

جموں۔ 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی محمد سعید نے کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کے سلسلے میں کہا کہ صرف 10 تا 15 فیصد کشمیری پنڈت وادی کشمیر کو واپس آنا پسند کریں گے، کیونکہ ان کی اکثریت وادی سے باہر اپنے قدم جما چکی ہے۔ دریں اثناء پی ڈی پی اور بی جے پی کی مخلوط حکومت میں بازآبادکاری کے مسئلہ پر تازہ تنازعہ پیدا ہوگیا۔ اپوزیشن نیشنل کانفرنس کے کارگزار صدر عمر عبداللہ نے صدر پی ڈی پی مفتی محمد سعید کے کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کے سلسلے میں اختیار کردہ موقف پر سخت تنقید کی اور کہا کہ انہوں نے ایک بار پھر اپنا موقف برعکس کرلیا ہے۔

قبل ازیں انہوں نے کشمیری پنڈتوں کیلئے علیحدہ صنعتی علاقے قائم کرنے کا اعلان کیا تھا اور انہیں اصل دھارے سے الگ رکھنا چاہتے تھے۔ ایک اور سینئر نیشنل کانفرنس قائد نے پی ڈی پی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس کے برسراقتدار آنے کے بعد سے اب تک مختلف قسم کے تنازعات کا سلسلہ جاری ہے۔ کبھی فوج کے خصوصی اختیارات پر ،کبھی ریاستی پرچم پر اور اب پنڈتوں پر۔ الہ آباد سے موصولہ اطلاع کے بموجب وی ایچ پی نے کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کیلئے جامع صنعتی علاقوں کے قیام پر شدت سے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ علیحدگی پسندوں کو ہندوستان کو یہ کہنے کا یہ حق نہیں کہ مذہبی اقلیتوں کو جموں و کشمیر میں کہاں قیام کرنا چاہئے

اور کہاں کاروبار کرنا چاہئے۔ وی ایچ پی کے بین الاقوامی کارگذار صدر پراوین توگاڑیہ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اب جبکہ کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کا ایک درست اقدام کیا جارہا ہے، علیحدگی پسند ’’نخرے‘‘ دکھا رہے ہیں۔ توگاڑیہ کا بیان کشمیری پنڈتوں کی بازآبادکاری کیلئے نئے صنعتی علاقے قائم کرنے کے چیف منسٹر کے اعلان کی علیحدگی پسندوں کی جانب سے مخالفت کے پس منظر میں منظر عام پر آیا ہے۔ جموں سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریس نے آج مفتی محمد سعید پر اپنا موقف برعکس کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ مفتی محمد سعید نے جامع صنعتی علاقے کشمیری پنڈتوں کیلئے قائم کرنے کا اعلان کیا تھا، لیکن صرف تین یا چار دن کے اندر ہی جبکہ وہ دہلی میں مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے ملاقات کرکے صنعتی علاقوں کے قیام کیلئے 62 ایکر اراضی کا مطالبہ کرچکے ہیں ، اپنا موقف برعکس کرلیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT