Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / ’’کشمیری کاز‘‘ کیلئے جدوجہد میں مدد کا عہد : حافظ سعید

’’کشمیری کاز‘‘ کیلئے جدوجہد میں مدد کا عہد : حافظ سعید

’’ہندوستان کی درخواست پر امریکہ نے پاکستان پر میری نظربندی کیلئے دباؤ ڈالا تھا‘‘

لاہور ۔ 24 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی دہشت گرد حملوں کے اصل سازشی سرغنہ اور ممنوعہ جماعت الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید کو جو گھر پر نظربند تھے بالآخر آج آزاد ہوگئے اور کہا کہ اب وہ کشمیر کے کاز کیلئے سارے عوام کو متحد کریں گے اور کشمیریوں کو آزادی دلانے کی کوششوں میں مدد کریں گے۔ سعید نے ان کو رہائی کا جشن منانے کیلئے گھر پر جمع ہونے والوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’محض کشمیر پر آواز اٹھانے سے روکنے کیلئے مجھے 10 ماہ حراست میں رکھا گیا‘‘۔ سعید نے مزید کہا کہ ’’میں کشمیریوں کیلئے لڑتا رہوں گا۔ کشمیر کے کاز کیلئے میں سارے ملک کے افراد کو متحد کروں گا اور ہم کشمیریوں کو آزادی کی منزل دلانے میں مدد کی کوشش کریں گے‘‘۔ سعید نے کہا کہ انہیں اس وقت حراست میں لیا گیا تھا جب انہوں نے جنوری میں کشمیریوں سے یگانگت کیلئے ایک ماہ طویل مہم چلانے کا اعلان کیا تھا۔ سعید نے اس رہائی کو اپنی بے قصوری کا دعویٰ ثابت کرنے کیلئے استعمال کیا اور کہا کہ ’’مجھے خوشی ہے کہ میرے خلاف ایک بھی الزام صحیح ثابت نہیں ہوا، جس پر لاہور ہائیکورٹ کے تین ججوں نے میری رہائی کا حکم دیا۔

ہندوستان کی طرف سے میرے خلاف بے بنیاد الزامات لگائے گئے تھے۔ لاہور ہائیکورٹ کے عدالتی جائزہ بورڈ کے فیصلہ نے ثابت کردیا کہ میں بے قصور ہوں‘‘۔ سعید نے کہا کہ ’’حکومت پاکستان پر امریکہ کے دباؤ کے تحت مجھے حراست میں رکھا گیا تھا اور ہندوستان کی درخواست پر امریکہ نے ایسا کیا تھا‘‘۔ سعید کے خطاب کے دوران ان کے حامی نے ہندوستان کے خلاف نعرہ بازی کی اور ان کے لیڈر کی رہائی ’’کشمیری کیلئے ایک امید‘‘ قرار دیا۔ حافظ سعید نے سابق وزیراعظم نواز شریف پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے مسئلہ کشمیر کو نظرانداز کرتے ہوئے ہندوستان کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھا کر ملک سے غداری کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان اپنے غیرملکی آقاؤں سے احکام حاصل کرکے ان کی تعمیل کررہی ہے۔ انہوں نے جموں و کشمیر میں ہندوستان کے مظالم کا بھی تذکرہ کیا۔ حافظ سعید نے دعویٰ کیا کہ امریکہ نے ہندوستان کی درخواست پر پاکستان پر دباؤ ڈالا تھا کہ انہیں نظربند رکھا جائے۔

 

حافظ سعید کو دوبارہ گرفتار کرنے اور
تازہ فرد جرم عائد کرنے کا امریکی مطالبہ
واشنگٹن ۔ 24 نومبر(سیاست ڈاٹ کام) ممبئی کے 26/11 حملوں کے اصل سازشی سرغنہ اور جماعت الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید کی گھر پر نظربندی سے رہائی پر امریکہ نے گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس کی دوبارہ گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ امریکہ نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہیکہ حافظ سعید کو دوبارہ گرفتار کیا جائے اور 26 نومبر کے دہشت گرد حملہ کی سازش کرنے کا فردجرم ان پر دوبارہ عائد کیا جائے۔ امریکہ نے لشکرطیبہ کے قائد حافظ سعید کی قیامگاہ پر نظربندی سے رہائی پر گہری تشویش ظاہر کی ہے اور ان کے سر پر ایک کروڑ امریکی ڈالر کا انعام رکھنے کا دوبارہ اعلان کیا ہے۔ 2008ء میں محکمہ خارجہ امریکہ نے حافظ سعید کو عالمی دہشت گرد قرار دیتے ہوئے 2012ء کے ان کے سر پر ایک کروڑ امریکی ڈالر انعام کا اعلان کیا تھا جو کسی بھی ایسے شخص کو دیئے جانے تھے جو حافظ سعید کے بارے میں ایسی اطلاعات فراہم کرتا جن سے انہیں انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے میں مدد مل سکتی تھی۔

TOPPOPULARRECENT