Friday , January 19 2018
Home / ہندوستان / کشمیر سیلاب 109 سال میں بدترین : راج ناتھ سنگھ

کشمیر سیلاب 109 سال میں بدترین : راج ناتھ سنگھ

نئی دہلی 12 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کچھ علیحدگی پسندوں کی جانب سے وادی کشمیر میں ریلیف و امداد کی تقسیم کے کاموں میں رکاوٹوں کی کوششوں کونظر انداز کرتے ہوئے حکومت نے آج کہا کہ اس کی اصل توجہ 109 سال میں سب سے بدترین سیلاب سے متاثر ہونے والے عوام کو راحت اور مدد پہونچانے پر مرکوز ہے ۔ وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرت

نئی دہلی 12 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کچھ علیحدگی پسندوں کی جانب سے وادی کشمیر میں ریلیف و امداد کی تقسیم کے کاموں میں رکاوٹوں کی کوششوں کونظر انداز کرتے ہوئے حکومت نے آج کہا کہ اس کی اصل توجہ 109 سال میں سب سے بدترین سیلاب سے متاثر ہونے والے عوام کو راحت اور مدد پہونچانے پر مرکوز ہے ۔ وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے اپنی آنکھیں بند کرلی ہیں۔ ہم علیحدگی پسندوں کی جانب نہیں دیکھ رہے ہیں۔ ہم عوام کو راحت پہونچانے کے تعلق سے پابند عہد ہیں۔ صورتحال چاہے کتنی ہی مشکل کیوں نہ ہو راحت اور امدادی کام جاری رہے گا ۔ ان کے ریمارکس ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب یہ اطلاعات ہیں کہ کچھ علیحدگی پسندوں کی جانب سے عوام کو راحت و امداد کی تقسیم میں مصروف ٹیموں پر سنگباری کیلئے اکسایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وادی کشمیر میں 1,200 گاؤں اس سیلاب سے بری طرح متاثر ہوئے ہیں ۔ حکومت کی اصل توجہ اس بات پر ہے کہ زیادہ سے زیادہ افراد کو مشکل سے نکالا جائے اور زیادہ سے زیادہ افراد کو راحت اور مدد پہونچائی جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ وادی میں 400 گاؤں پوری طرح زیر آب آگئے ہیں ۔ فوج ‘ ائر فورس ‘ بحریہ اور نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس ٹیم کی جانب سے 1.3 لاکھ افراد کو بچالیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں یہ 109 سال میں سب سے زیادہ تباہ کن سیلاب ہے ۔ 1,200 گاؤں پوری طرح زیر آب ہیں ۔ چار سو گاؤں پوری طرح ڈوب چکے ہیں جبکہ جموں میں 300 گاؤں پوری طرح زیر آب آگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں پانچ اضلاع اور جموں میں چھ اضلاع متاثر ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ راحت و امدادی کاموں میں بہتری پیدا کرنے کیلئے مرکزی معتمد داخلہ سرینگر میں موجود ہیں۔

TOPPOPULARRECENT