Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / کشمیر میں احتجاج ‘داعش اور پاکستان کے پرچم لہرائے گئے

کشمیر میں احتجاج ‘داعش اور پاکستان کے پرچم لہرائے گئے

پولیس نے تعاقب کرکے احتجاجیوں کو منتشر کردیا، واقعہ کی تحقیقات کا تیقن، پولیس کیساتھ جھڑپوں میں کوئی زخمی نہیں

پولیس نے تعاقب کرکے احتجاجیوں کو منتشر کردیا، واقعہ کی تحقیقات کا تیقن، پولیس کیساتھ جھڑپوں میں کوئی زخمی نہیں
سرینگر 12 جون (سیاست ڈاٹ کام )وادی کشمیر میں منگل کو دو نا معلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں ایک کشمیری علحدگی پسند کی ہلاکت کے خلاف احتجاج کے دوران وادی کے کم سے کم دو مقامات پر آج خوفناک دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس (داعش) کے علاوہ پاکستان کے پرچم لہرائے گئے جس کی بناء پر صیانتی انتظامیہ میں دہشت پھیل گئی اور پولیس نے تیقن دیا کہ اِس واقعہ کی مکمل تحقیقات کی جائیں گی اور خاطیوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ نوجوانوں کے ایک گروپ کو کارروائی کا سامنا ہے جس نے دولت اسلامیہ کا سیاہ پرچم لے کر جامع مسجد تک براہ نوہٹا چوک جو سری نگر کے مضافات میں ہے ، نماز جمعہ کے بعد جلوس نکالنے کی کوشش کی تھی۔ نوجوانوں کے ایک گروپ نے جن کے چہروں پر نقاب تھے اور وہ داعش کے پرچم جیسا ایک سیاہ پرچم لہرائے ہوئے تھے نماز جمعہ کے فوری بعد جامع مسجد سے نوہٹا تک ایک جلوس نکالا۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ اس علاقہ میں پولیس حرکت میں آنے سے قبل چند نوجوان پاکستانی پرچم لہرا رہے تھے تاہم پولیس نے اُن کا تعاقب کرتے ہوئے انہیں بھاگنے پر مجبور کردیا تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے ۔ شمالی کشمیر کے کپواڑہ میں بھی نماز جمعہ کے بعد بعض مقامات پر پاکستانی پرچم لہرائے گئے ۔ سوپور ٹاون کے علاوہ ضلع بارہمولا سے بھی پر تشدد احتجاج کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں جہاں احتجاجیوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کے درمیان جھڑپیں ہوئی ہیں تاہم کوئی بھی شخص زخمی نہیں ہوا ۔ سید علی شاہ گیلانی کی قیادت میں سخت گیر حریت کانفرنس نے تحریک حریت کے کارکن الطاف شیخ کی منگل کو نامعلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف بعد نماز جمعہ احتجاج کی اپیل کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT