Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں انکاؤنٹر جیش محمد کا خوفناک کمانڈر ہلاک

کشمیر میں انکاؤنٹر جیش محمد کا خوفناک کمانڈر ہلاک

پولیس ، نیم فوجی فورسیس اور فوج کی مشترکہ کارروائی ، اہم کامیابی : ڈی جی پی
سرینگر ۔9 اکٹوبر۔( سیاست ڈاٹ کام) پولیس نے کہا ہے کہ سکیورٹی فورسیس کی مشترکہ ٹیم نے آج ایک اہم پیشرفت کرتے ہوئے جیش محمد کے کمانڈر عمر خالد کو شمالی کشمیر کے لڈورا علاقہ میں ہلاک کردیا۔ جموں و کشمیر کے ڈائرکٹر جنرل پولیس ایس پی وید نے کہاکہ سکیورٹی فورسیس کے ذریعہ یہ ایک اہم پیشرفت ہوئی ہے کیونکہ یہ عسکریت پسند شمالی کشمیر میں سکیورٹی کیمپوں پر کئی حملوں میں ملوث تھا اور بالخصوص پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنارہا تھا ۔ انھوں نے کہاکہ ’’جموں و کشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ ، مقامی پولیس ، سی آر پی ایف اور فوج کی مشترکہ کارروائی میں اس کو ہلاک کیا گیا ‘‘ ۔ پولیس نے کہاکہ خالد جو ایک پاکستانی شہری ہے گزشتہ دو تا تین سال سے اس علاقہ میں سرگرم تھا ۔ علاوہ ازیں اس دہشت گرد تنظیم میں بھرتیوں کے انتظامات میں اس کا کلیدی رول تھا ۔ پولیس نے کہاکہ اس نے حال ہی میں ایک اسپیشل پولیس آفیسر اور ان کے سات سالہ لڑکے پر ہانڈوارہ میں حملہ کیا تھا ۔ انھوں نے کہاکہ خالد A++ زمرہ سے تعلق رکھنے والا ایک انتہائی خوفناک اور سرکردہ دہشت گرد تھا جس کے سرپر سات لاکھ روپئے کا انعام رکھا گیا تھا ۔ انکاؤنٹر کی تفصیلات بیان کرتے ہوئے پولیس نے کہاکہ سکیورٹی فورسیس نے لڈورہ میں عسکریت پسندوں کی موجودگی کے بارے میں باوثوق خفیہ اطلاعات موصول ہونے کے بعد اس علاقہ کی ناکہ بندی کرتے ہوئے تلاشی مہم شروع کی تھی اس دوران تلاشی مہم میں مصروف ٹیم پر عسکریت پسندوں نے فائرنگ شروع کردی جس کے ساتھ ہی بندوق کے ذریعہ لڑائی چھڑگئی ، دونوں جانب سے فائرنگ کا تبادلہ جاری رہا ۔ عسکریت پسندوں کو فرار ہونے سے روکنے کیلئے مزید سپاہیوں کو طلب کیا گیا تھا ۔ پولیس نے توثیق کی کہ جیش محمد کا کمانڈر عمر خالد اس انکاؤنٹر میں ہلاک ہوگیا ۔ سخت سکیورٹی زون میں واقع سرینگر ایرپورٹ کے قریب بی ایس ایف بٹالین ہیڈکوارٹرز پر جیش محمد کے حالیہ حملہ میں عمرخالد کے رول کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ عمر خالد کے ساتھ 3 دیگر عسکریت پسند بھی انکاؤنٹر میں ہلاک ہوگئے ۔

TOPPOPULARRECENT