Sunday , January 21 2018
Home / سیاسیات / کشمیر میں بی جے پی کیساتھ اتحاد پر نظرثانی کا مشورہ

کشمیر میں بی جے پی کیساتھ اتحاد پر نظرثانی کا مشورہ

سرینگر ، 17 جون (سیاست ڈاٹ کام)سینئر پی ڈی پی لیڈر طارق حمید کارا نے آج جموں وکشمیر کے سیلاب زدہ عوام کیلئے معلنہ ریلیف پیاکیج کو ’’معمولی ‘‘ رقم قرار دیتے ہوئے اپنی برسراقتدار پارٹی کو مشورہ دیا کہ اگر مرکز کشمیریوں کے تئیں اسی طرح کا کینہ پرور رویہ جاری رکھتا ہے تو بی جے پی کے ساتھ اپنے اتحاد پر نظرثانی کی جائے ۔ انھوں نے کہاکہ پی

سرینگر ، 17 جون (سیاست ڈاٹ کام)سینئر پی ڈی پی لیڈر طارق حمید کارا نے آج جموں وکشمیر کے سیلاب زدہ عوام کیلئے معلنہ ریلیف پیاکیج کو ’’معمولی ‘‘ رقم قرار دیتے ہوئے اپنی برسراقتدار پارٹی کو مشورہ دیا کہ اگر مرکز کشمیریوں کے تئیں اسی طرح کا کینہ پرور رویہ جاری رکھتا ہے تو بی جے پی کے ساتھ اپنے اتحاد پر نظرثانی کی جائے ۔ انھوں نے کہاکہ پی ڈی پی اور بی جے پی کے درمیان اتحاد کا ایجنڈہ محض کاغذ تک محدود رہ گیا ہے اور روز اول سے مخلوط حکومت کی کارکردگی میں کچھ بھی ہم آہنگی دکھائی نہیں دی ہے ۔ طارق حمید نے یہاں جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ اگر حکومت ہند یہی طرز عمل کشمیر کے تعلق سے جاری رکھے تو پی ڈی پی کو بی جے پی کے ساتھ اپنے رشتہ پر نظرثانی کرلینا چاہئے کیونکہ اس مخلوط کو برقرار رکھنا کشمیریوں اور پارٹی دونوں کو مزید نقصان پہنچانے کے مترادف ہوگا ۔ انھوں نے بیان کیا کہ چاہے این ایچ پی سی کی طرف سے پاور پراجکٹوں کی واپسی کا معاملہ ہو ، وسائل کا الاٹمنٹ ہو یا مختلف خطوں کے درمیان ادارہ جات کی تقسیم ہو ہر معاملے میں مخلوط کے درمیان تضاد رائے محسوس ہوئی ہے ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی جانب سے گزشتہ روز یہ اعلان کا حوالہ دیتے ہوئے پی ڈی پی لیڈر نے کہاکہ اس طرح کا کھلواڑ کرتے ہوئے مرکز نے کشمیریوں کے معاملے میں اپنے خفیہ ارادوں کو آشکار کردیا ہے ۔ انھوں نے کہاکہ حکومت ہند کی جانب سے سیلاب زدہ لوگوں کیلئے نام نہاد پیاکیج زخموں پر نمک چھڑکنے جیسا ہے، جو پہلے ہی آفات سماوی سے پریشان حال ہیں۔

TOPPOPULARRECENT