Sunday , April 22 2018
Home / Top Stories / کشمیر میں تیسرے دن بھی ہڑتال ’شوپیان چلو ‘ ناکام

کشمیر میں تیسرے دن بھی ہڑتال ’شوپیان چلو ‘ ناکام

سرینگر ، 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کشمیر انتظامیہ نے بدھ کے روز علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کو تھانہ و خانہ نظر بند جبکہ جنوبی کشمیر بالخصوص قصبہ شوپیان کی ناکہ بندی کرکے ’شوپیان چلو‘ کی کال ناکام بنادی۔ علیحدگی پسند قیادت نے گذشتہ روز اعلان کیا تھا کہ مزاحمتی قائدین اور تمام حریت پسند رہنما 4 اپریل کو شوپیاں جائیں گے جہاں جامع مسجد شوپیان میں یکم اپریل کے مہلوکین کو خراج عقیدت ادا کرنے کے ساتھ ساتھ مہلوکین کے لواحقین اور اعزہ کے تئیں تعزیت ، ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا جائے گا۔ اگرچہ گیلانی، میرواعظ اور یاسین ملک نے چہارشنبہ کو ہڑتال کی کوئی کال نہیں دی تھی تاہم باوجود اس کے وادی میں مسلسل تیسرے دن بھی مکمل ہڑتال رہی۔
واضح رہے کہ ضلع شوپیان کے درگڈ سوگن و کچھ ڈورہ اور ضلع اننت ناگ کے دیالگام میں یکم اپریل کو ہوئے جنگجو مخالف آپریشنوں میں جہاں 13 مقامی جنگجو اور 3 فوجی اہلکار جاں بحق ہوئے وہیں اِن مسلح تصادموں کے مقامات پر احتجاجیوں کی سیکورٹی فورسز کے ساتھ ہونے والی جھڑپوں میں 4 عام شہری ہلاک جبکہ قریب 200دیگر زخمی ہوئے ۔

چوتھا دن: کشمیر میں ریل اور جنوبی کشمیر میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات بدستور معطل
سری نگر ، 4 اپریل (یو ا ین آئی) وادی کشمیر میں ریل خدمات بدھ کو مسلسل چوتھے روز بھی معطل رہیں۔ اس کے علاہ جنوبی کشمیر میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات بدستور منقطع رکھی گئی ہیں۔ دوسری جانب انتظامیہ کے احکامات پر وادی کے تمام تعلیمی اداروں میں بدھ کو مسلسل تیسرے دن بھی درس وتدریس کا عمل معطل رہا جبکہ مختلف اداروں بالخصوص یونیورسٹیزکی طرف سے لئے جانے والے امتحانات ملتوی کردیے گئے ۔ اگرچہ کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے بدھ کے روز کوئی ہڑتال کی کال نہیں دی تھی اور لوگوں کو ‘شوپیان’ تک مارچ کرنے کے لئے کہا تھا، تاہم وادی بھر میں بدھ کو مسلسل تیسرے دن بھی مکمل ہڑتال کی گئی جس دوران انتظامیہ نے مختلف علاقوں میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کر رکھیں۔
واضح رہے کہ جنوبی کشمیر کے دو اضلاع شوپیان اور اننت ناگ میں یکم اپریل کو ایک ہی دن کے اندر پیش آئی 20 ہلاکتوں کے تناظر میں انتظامیہ نے احتیاطی طور پر اُسی دن ریل و انٹرنیٹ خدمات معطل کرادیں جبکہ تعلیمی ادارے بند رکھنے اور امتحانات ملتوی کرنے کے اعلانات کئے تھے ۔ یکم اپریل کو جنوبی کشمیر میں پیش آئی اموات کے خلاف وادی میں ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں اب تک ایک نوجوان ہلاک جبکہ درجنوں دیگر زخمی ہوچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT