Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / کشمیر میں جنگجوؤں کیخلاف کارروائیاں جاری رہیں گی

کشمیر میں جنگجوؤں کیخلاف کارروائیاں جاری رہیں گی

وادی کی صورتحال قابو میں ہے، کشمیری نوجوان قوم کی خدمت کیلئے تیار ۔ کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل جے ایس سندھو کا ادعا

سرینگر 15جولائی (سیاست ڈاٹ کام ) فوج کی 15 ویں کورز کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل جے ایس سندھو نے کہا کہ وادی کشمیر میں جنگجو مخالف کارروائیاں ہر صورت میں جاری رکھی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ غیرپیشہ ورانہ انداز کا مظاہرہ کرنے والے فوجیوں کو کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ لیفٹیننٹ جنرل سندھو نے ہفتہ کو یہاں ایک تقریب کے موقع پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہہمیں ظہور احمد ٹھوکر نامی فوجی اہلکار کے بارے میں تاحال کوئی اطلاع موصول نہیں ہے ۔ ہم مصدقہ اطلاع کے بغیر یہ نہیں کہہ سکتے ہیں کہ اس نے جنگجوؤں کی صفوں میں شمولیت اختیار کی ہے۔ خیال رہے کہ ٹیریٹوریل آرمی کیمپ بارہمولہ میں تعینات فوجی ظہور احمد ٹھوکر 6 اور 7 جولائی کی درمیانی رات کے دوران ایک اے کے رائفل اور اس کے کچھ میگزینیں لیکر فرار ہوگیا۔ ظہور احمد ٹھوکر کا تعلق جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ سے ہے ۔ جے ایس سندھو نے جنگجوؤں کے خلاف آپریشن جاری رکھنے کا عزم کرتے ہوئے کہا کہ ہم جنگجوؤں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری رکھیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ وادی میں صورتحال قابو میں ہے اور سیکورٹی فورسز صورتحال کو مزید بہتر بنانے کی سمت میں کام کررہے ہیں۔لیفٹیننٹ جنرل سندھو نے کہا کہ کشمیری نوجوان قوم کی خدمت کے لئے آگے آرہے ہیں اور فوج میں بھرتی کی ریلیوں میں نوجوانوں کی بھاری شرکت اس کا عکاس ہے ۔

انہوں نے کہا کہ200 اسامیوں کے لئے 5 ہزار کشمیری نوجوان آگے آگئے ۔ یہ اس بات کا عکاس ہے کہ کشمیری نوجوان قوم کی خدمت کرنا چاہتے ہیں۔ کور کمانڈر نے کہا کہ فوجی جوان انتہائی پیشہ ورانہ انداز میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ غیرپیشہ ورانہ انداز کا مظاہرہ کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ خفیہ اطلاعات کے مطابق وادی کشمیر میں 100 سے 120 جنگجو سرگرم ہیں۔
ایل او سی کے قریب پاکستان سے فائرنگ، ایک جوان ہلاک
اِس دوران ایک آرمی جوان آج جموں و کشمیر میں لائن آف کنٹرول کے راجوری سیکٹر میں پاکستانی دستوں کی طرف سے مورٹار شل باری اور فائرنگ میں ہلاک ہوگیا، دفاع کے ترجمان نے جموں میں یہ بات کہی۔ اُنھوں نے بتایا کہ لانس لائک محمد نصیر فائرنگ کی زد میں آگئے۔ 35 سالہ نصیر سرحدی ضلع پونچھ سے تعلق رکھتے تھے۔ پاکستان آرمی نے آج دن میں 1-30 راجوری میں ہندوستانی فوجی چوکیوں پر بلا اشتعال فائرنگ شروع کردی۔ ہندوستانی فوج نے سخت اور مؤثر جواب دیا۔ پاکستانی فائرنگ اور شلباری ایل او سی کے پاس بالاکوٹ، پنج گریان ، نائیکا اور مانجا کوٹ علاقوں میں پیش آئی۔ فائرنگ کے اِس تبادلے میں لانس نائک نصیر شدید زخمی ہوئے اور اپنے زخموں سے جانبر نہ ہوسکے۔

TOPPOPULARRECENT