Wednesday , December 13 2017
Home / پاکستان / کشمیر میں حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزیاں

کشمیر میں حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزیاں

پاکستان کا الزام ، استصواب عامہ کے ذریعہ مسئلہ کی یکسوئی ممکن
اسلام آباد۔ 10 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے آج ہندوستان پر کشمیر میں حقوق انسانی کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا۔ حزب المجاہدین کے سرکردہ کمانڈر کی ہلاکت کا حوالہ دیتے ہوئے پاکستان نے یہ ردعمل ظاہر کیا اور کہا کہ کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کے ذریعہ ہی مسئلہ کشمیر کو حل کیا جاسکتا ہے۔ وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ بے قصور کشمیری عوام کی مسلسل ہلاکتوں کی پاکستان سخت مذمت کرتا ہے۔ کشمیری برہان وانی اور دیگر کئی بے قصور عوام کی جس انداز میں ماورائے دستور ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے ، وہ انتہائی قابل مذمت ہے۔ یہ ہلاکتیں حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزی ہے اور اس طرح کی کارروائیوں سے کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کے مطالبہ کو روکا نہیں جاسکتا۔ پاکستان نے کشمیری قائدین کو محروس رکھنے پر بھی تشویش ظاہر کی اور حکومت ہند پر زور دیا کہ وہ حقوق انسانی قواعد کی تعمیل کرے۔ اس کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کا پاس و لحاظ رکھے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اپنے اس موقف کا اعادہ کرتا ہے کہ جموں و کشمیر تنازعہ کو وہاں کے عوام کی حق رائے کے ذریعہ ہی حل کیا جاسکتا ہے۔ اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے استصواب عامہ سے متعلق قرارداد کے مطابق اس مسئلہ کی یکسوئی ممکن ہے۔اس وقت وادی میں تشدد کا جو سلسلہ جاری ہے ، وہ انتہائی قابل مذمت ہے اور حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزی کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT