Tuesday , December 18 2018

کشمیر میں حکومت کاکسی بھی وقت زوال

جموں ۔ 22 جون (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں پی ڈی پی ۔ بی جے پی مخلوط حکومت پر تمام محاذوں پر ناکام ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے ریاستی کانگریس نے کہا کہ یہ حکومت کسی بھی وقت زوال سے دوچار ہوسکتی ہے۔ جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی صدر غلام احمد میر نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں حکومت کا کوئی وجود ہ

جموں ۔ 22 جون (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں پی ڈی پی ۔ بی جے پی مخلوط حکومت پر تمام محاذوں پر ناکام ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے ریاستی کانگریس نے کہا کہ یہ حکومت کسی بھی وقت زوال سے دوچار ہوسکتی ہے۔ جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی صدر غلام احمد میر نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں حکومت کا کوئی وجود ہی نہیں ہے۔ یہ صرف چند افراد کے مابین مخلوط اتحاد ہے جنہوں نے اقتدار کی خاطر آپس میں ہاتھ ملا لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ حکومت اپنی میعاد پوری کرے لیکن موجودہ حکومت کبھی بھی زوال سے دوچار ہوسکتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پی ڈی پی ۔ بی جے پی حکومت نے اقتدار پر آنے سے قبل عوام سے کئی وعدے کئے لیکن یہ سب محض اقتدار کی خاطر عوام کو دھوکہ دینے والے وعدے ثابت ہوئے۔ حکومت ایک وعدہ بھی پورا کرنے میں ناکام رہی ہے۔ غلام احمد میر نے حکومت پر ہمیشہ تنازعات میں گھرے رہنے کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو بہتر حکمرانی پر توجہ مرکوز کرنے کی بجائے یہ حکومت صرف تنازعات میں گھری ہوئی رہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی اور مرکزی حکومت نے اب تک ان متاثرین کو کوئی مدد بہم نہیں پہنچائی جو گذشتہ سال آئے تباہ کن سیلاب میں اپنی املاک سے محروم ہوگئے ہیں۔ انہوں نے یو پی اے حکومت کی مثال دی جس نے اترکھنڈ اور کشمیر میں آئے زلزلہ کے متاثرین کو فوری مدد پہنچائی تھی۔ اس کے برعکس موجودہ حکومت نے سیلاب کے متاثرین پر زخموں پر نمک چھڑکنے کا کام کیا ہے۔ ریاست میں کسانوں کو 37 روپئے کی راحت فراہم کرنے کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سے حکومت کے ارادوں کا بخوبی اندازہ کیا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ اب ریاست کے عوام حکومت کے وعدوں سے بیزار ہوچکے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT