کشمیر میں دہشت گرد حملے ، 3 ملازمین پولیس ہلاک

سرینگر۔6اپریل ( سیاست ڈاٹ کام)عسکریت پسندوں نے 3دہشت گرد حملے کئے جو واضح طور پر ایک دوسرے ہم آہنگ تھے ‘ ان حملوں میں تین ملازمین پولیس ہلاک اور دو افراد زخمی ہوگئے ۔ وادی کشمیر میں جہاں ایشیاء کا وسیع ترین گلستان لالہ ہے ‘ آج عوام کیلئے کھول دیا گیا ۔ یہ سیاحوں کو جموں و کشمیر آنے کی ترغیب دینے کیلئے ایک پُرکشش مقام ہے ۔ تین گھنٹوں م

سرینگر۔6اپریل ( سیاست ڈاٹ کام)عسکریت پسندوں نے 3دہشت گرد حملے کئے جو واضح طور پر ایک دوسرے ہم آہنگ تھے ‘ ان حملوں میں تین ملازمین پولیس ہلاک اور دو افراد زخمی ہوگئے ۔ وادی کشمیر میں جہاں ایشیاء کا وسیع ترین گلستان لالہ ہے ‘ آج عوام کیلئے کھول دیا گیا ۔ یہ سیاحوں کو جموں و کشمیر آنے کی ترغیب دینے کیلئے ایک پُرکشش مقام ہے ۔ تین گھنٹوں میں مہلک ترین حملے ضلع شوپیان کے دیہات امنشی پورہ میں کئے گئے جو جنوبی کشمیر میں واقع ہے ۔ ان حملوں سے تین ملازمین پولیس ہلاک ہوگئے ‘ یہ حملے ایک دن ہوئے ہیں جب کہ چیف منسٹر مفتی محمد سعید نے جھیل ڈل کے کنارے گلستان لالہ کا افتتاح کرتے ہوئے اُمید ظاہر کی کہ وادی کشمیر میں سیاحوں کی جاریہ سال کے سیزن میں زبردست آمد دیکھی جائے گی اور انہوں نے کہا کہ سیاحوں کی تعداد اتنی زیادہ ہوگی جس سے ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی ۔ ایک پولیس عہدیدار نے کہا کہ تین ملازمین پولیس ہیڈ کانسٹبل مشتاق احمد اور کانسٹبلس شبیر حسین اور نظیر احمد وانی اس دیہات کے دورہ پر تھے تاکہ معمول کے مطابق ایک فوجداری مقدمہ کی تحقیقات کرسکیں ‘ جب کہ عسکریت پسندوں نے اُن پرحملہ کیا ۔ کانسٹبلس غیر مسلح تھے اور سرکاری گاڑی میں سفر کررہے تھے ۔ حملہ دیڑھ بجے دن کیا گیا ۔ پہلا حملہ شمالی کشمیر کے ضلع بارہ مولہ کے علاقہ پٹن میں 11.45بجے دن ہوا ‘ جب کہ عسکریت پسندوں نے پولیس عہدیدار پر جو ایک مسافر بس میں سفر کررہا تھا فائرنگ کی ۔ سب انسپکٹر آف پولیس غلام مصطفیٰ کو دو پستول بردار عسکریت پسندوں نے ایک بس میں گولی مار دی جو پٹن جارہی تھی ۔اس کے نتیجہ میں پولیس عہدیدار زخمی ہوگیا ۔بس کے ڈرائیور نے گاڑی ایک مقامی پولیس چوکی تک پہنچادی جہاں پر ملازمین پولیس نے اپنے زخمی ساتھی کو اسپتال منتقل کیا ۔ پولیس عہدیدار کو اسکمس ہاسپٹل منتقل کیا گیا ہے جہاں ڈاکٹروں کے مطابق اس کی حالت ’’مستحکم ‘‘ ہے ۔ تیسرا حملہ ترال کے علاقہ میں ضلع پلواما میں پیش آیا جہاں انتہا پسندوں نے ایک سابق عسکریت پسند پر تقریباً 2.45بجے دن گولی چلاکر اسے زخمی کردیا ۔ رفیق احمد بھٹ حزب المجاہدین کا سابق عسکریت پسند تھا ‘ اُس پر گولیاں چلائی گئیں اور بندوق برداروں نے اسے شدید زخمی کردیا ۔ اُسے علاج کیلئے سرینگر منتقل کیا گیا ۔ تینوں حملوں کی ابھی تک کسی بھی عسکریت پسند تنظیم نے ذمہ داری قبول نہیںکی ہے ۔
مفتی سعید حکومت افسپا کی تنسیخ کے حق میں
جموں ۔ 6 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جموں و کشمیر حکومت آج وادی میں دہشت گرد حملوں کے باوجود ریاست کے بیشتر حصوں سے متنازعہ افسپا قانون کی مرحلہ وار دست برداری کے حق میں ہے ۔ نیشنل کانفرنس رکن اسمبلی دیویندر رانا کے سوال کا تحریری جواب دیتے ہوئے چیف منسٹر مفتی محمد سعید نے کہاکہ سکیورٹی صورتحال میں بہتری کو پیش نظر رکھتے ہوئے ریاستی حکومت اُن علاقوں کی نشاندہی کریگی جہاں طویل عرصہ سے عسکریت پسندی کے واقعات پیش نہیں آئے ۔ ان علاقوں میں مرحلہ وار انداز میں فوج کو خصوصی اختیارات کے حامل قانون افسپا سے دستبرداری اختیار کی جائیگی ۔
واضح رہے کہ آج ہی وادی میں تین دہشت گرد حملے کئے گئے جن میں 3 پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ۔

TOPPOPULARRECENT