Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں شہری ہلاکتوں کیخلاف مکمل ہڑتال، کرفیو جیسی پابندیاں نافذ

کشمیر میں شہری ہلاکتوں کیخلاف مکمل ہڑتال، کرفیو جیسی پابندیاں نافذ

سرینگر 17جون (سیاست ڈاٹ کام ) وادی کشمیر میں جمعرات کی شام سے لیکر جمعہ کی شام تک تین عام شہریوں اور تین جنگجوؤں کی ہلاکت کے بعد پیدا شدہ کشیدہ صورتحال پر قابو پانے کیلئے گرمائی دارالحکومت سرینگر کے پائین شہر اور سیول لائنز کے کچھ حصوں کے علاوہ جنوبی کشمیر کے کچھ قصبوں بشمول کولگام، پلوامہ اور پانپور میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کردی گئی ہیں۔ سرینگر کے مضافاتی علاقہ رنگریٹ میں جمعرات کی شام کو سیکورٹی فورسز کی فائرنگ سے ایک نوجوان کی موت اور جنوبی ضلع اننت ناگ کے آرونی میں جمعہ کو جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والے مسلح تصادم جس کے دوران دو عام شہری اور تین جنگجو ہلاک ہوئے ، وادی میں ایک نئی کشیدگی کا سبب بن گئے ہیں۔ وادی میں جمعہ کو قریب ایک درجن مقامات پر ہونے والے پرتشدد احتجاجی مظاہروں کے دوران سیکورٹی فورسز کی کاروائی میں قریب تین درجن افراد زخمی ہوگئے ۔ کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے ضلع اننت ناگ کے آرونی اور سرینگر کے رنگریٹ علاقہ میں سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں تین عام کشمیری نوجوان کو گولی مار کر ہلاک کرنے ، دوکانوں کی توڑ پھوڑ اور شہروگام میں فوج کی مبینہ قہر سامانیوں کے خلاف آج کشمیر بند کی اپیل کی تھی۔ علیحدگی پسند قیادت کی اپیل پر ہفتہ کو وادی میں مکمل ہڑتال رہی جس کے دوران دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل رہی۔سرکاری دفاتر اور بینکوں میں معمول کا کام کاج بری طرح سے متاثر رہا جبکہ بیشتر تعلیمی ادارے بند رہے ۔ کشمیر یونیورسٹی نے آج کے امتحانات کی معطلی کا پیشگی اعلان کیا تھا۔ انتظامیہ نے ہڑتال کے دوران احتجاجی مظاہروں کے خدشے کے پیش سری نگر کے پائین شہر اور سیول لائنز کے کچھ حصوں کے علاوہ جنوبی کشمیر کے کچھ قصبوں بشمول کولگام، پلوامہ اور پانپور میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کردی ہیں۔

3 لشکر طیبہ جنگجوؤں کی لاشیں برآمد
اس دوران جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے آرونی میں مسلح جھڑپ کے مقام سے سبھی تین جنگجوؤں بشمول لشکر طیبہ ضلع
کمانڈر جنید متو کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔ ایک پولیس ترجمان نے ہفتہ کی صبح بتایا کہ لشکر طیبہ کے تینوں جنگجوؤں بشمول ضلع کمانڈر جنید متو کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔ مسلح جھڑپ کے مقام سے اسلحہ وگولہ بارود بھی برآمد ہوا ہے ۔ انہوں نے جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والے اس طویل تصادم کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ آرونی کے ماکرو محلہ میں جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق مصدقہ اطلاع ملنے پر اسٹیٹ پولیس، راشٹریہ رائفلز اور 90 بٹالیں سی آر پی ایف نے مذکورہ علاقہ میں جمعہ کی صبح تلاشی آپریشن شروع کیا۔پولیس ترجمان نے بتایا کہ جب سیکورٹی فورسز ایک مخصوص جگہ کی طرف پیش قدمی کررہے تھے تو وہاں موجود جنگجوؤں نے ان پر فائرنگ کی۔ انہوں نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے مابین باضابطہ طور پر جھڑپ کا آغاز ہوا۔ ترجمان نے بتایا کہ جب جنگجوؤں کے خلاف آپریشن جاری تھا، تو اس دوران لوگوں کے ایک ہجوم نے آپریشن میں رخنہ ڈالنے کے لئے پتھرمارنے شروع کردیئے ۔

TOPPOPULARRECENT