Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں شہری ہلاکتوں کے خلاف مکمل ہڑتال

کشمیر میں شہری ہلاکتوں کے خلاف مکمل ہڑتال

وسطی اضلاع میں پابندیاں نافذ، انٹرنیٹ اور ریل خدمات معطل
سری نگر10اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وسطی کشمیر کے دو اضلاع بڈگام اور گاندربل میں پیر کے روز دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت چار یا اس سے زیادہ افراد کے ایک جگہ جمع ہونے پر پابندیاں عائد کی گئیں جہاں اتوار کو سری نگر کی پارلیمانی نشست کے لئے ضمنی انتخابات کے تحت پولنگ کے دوران آزادی حامی احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے درمیان شدید جھڑپوں میں 8 نوجوان ہلاک جبکہ قریب 150 دیگر زخمی ہوگئے ۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ اگرچہ وادی کے کسی علاقہ میں کرفیو نافذ نہیں کیا گیا ہے ، تاہم بڈگام اور گاندربل اضلاع میں امن وامان کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لئے دفعہ 144 کے تحت پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ وادی میں جہاں تمام مواصلاتی کمپنیوں بشمول بی ایس این ایل کی موبائیل و براڈ بینڈ انٹرنیٹ خدمات ہفتہ اور اتوار کی نصب شب کو معطل کردی گئی تھیں، وہیں پیر کی صبح قریب ساڑھے نو بجے وادی میں بیشتر میڈیا اداروں کو انٹرنیٹ خدمات فراہم کرنے والی کمپنی سی این ایس نے بھی اپنی خدمات منقطع کردیں۔ سی این ایس نے یو این آئی کو بتایا کہ انہیں حکومت کی طرف سے انٹرنیٹ خدمات بند کرنے کی ہدایات ملی ہیں۔ انٹرنیٹ خدمات کی معطلی کے باعث وادی میں میڈیا اداروں کا کام ٹھپ ہوکر رہ گیا ہے ۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ موجودہ صورتحال کے پیش نظر انٹرنیٹ خدمات کو 12 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ لیا گیا ہے ۔ وادی میں 12 اپریل کو جنوبی کشمیر کے چار اضلاع پر محیط ‘اننت ناگ پارلیمانی نشست’ کے لئے ضمنی انتخابات کے تحت ووٹ ڈالے جانے ہیں۔ وادی میں شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور خطہ کے بانہال کے درمیان چلنے والی ریل سروس بھی معطل کردی گئی ہے ۔ ریلوے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ اتوار کو پیش آنے والے تشدد کے واقعات اور علیحدگی پسندوں کی جانب سے دی گئی ہڑتال کی کال کے پیش نظر ریل سروس کو احتیاطی تدابیر کے طور پر معطل کردیا گیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT