Thursday , August 16 2018
Home / ہندوستان / کشمیر میں عسکریت پسندی ختم ہونے کے دعوے پر تنقید

کشمیر میں عسکریت پسندی ختم ہونے کے دعوے پر تنقید

مرکزی وزیر جیتندر سنگھ کے بیان پر عمر عبداللہ کا شدید ردعمل
سری نگر ، 6 جون (سیاست ڈاٹ کام) نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے وزیر اعظم دفتر میں وزیر مملکت جتیندر سنگھ کا نام لئے بغیر کہا کہ ‘وہ کون تھا جس نے کہا کہ کشمیر میں ملی ٹینسی ختم ہورہی ہے اور اپنے آخری مرحلے میں ہے ؟’۔ انہوں نے کہا کہ صرف گذشتہ چند دنوں کے دوران دس سے زیادہ گرینیڈ حملے ہوئے ہیں۔ عمر عبداللہ نے شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے حاجن میں گذشتہ شام جنگجوؤں کی طرف سے فوج کے ایک کیمپ پر یو بی جی ایل گرینیڈس سے کئے گئے حملے پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ‘جنگجوؤں کی طرف سے فوجی کیمپ پر حملہ کیا۔ فوجی گاڑی کو نشانہ بناکر آئی ای ڈی دھماکہ کیا گیا۔ حالیہ دنوں کے دوران دس سے زیادہ گرینیڈ حملے کئے گئے ۔ وہ کون تھا جس نے کہا کہ کشمیر میں ملی ٹینسی ختم ہورہی ہے اور اپنے آخری مرحلے میں ہے ؟’۔ جتیندر سنگھ نے یکم جون کو جموں میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وادی میں جنگجویت اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے ۔ انہوں نے کہا تھا ‘جس طرح کی کاروائی اب ہورہی ہے ، بظاہر اب جنگجویت اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے ۔ اس کا احساس پاکستان کو بھی ہونے لگا ہے ‘۔ وزیر مملکت نے کہا تھا کہ گذشتہ چار برسوں میں وادی میں 600 جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے ۔ انہوں نے کہا تھا ‘بی جے پی دُور حکومت میں وادی میں اب تک 600 جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے ۔ یہ تعداد یو پی اے اول اور یو پی اے دوم سے بہت زیادہ ہے ‘۔

TOPPOPULARRECENT