Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / کشمیر میں ہلاکتوں کیخلاف مارچ، انجینئر عبدالرشید گرفتار

کشمیر میں ہلاکتوں کیخلاف مارچ، انجینئر عبدالرشید گرفتار

سری نگر ، 20جولائی (سیاست ڈاٹ کام) عوامی اتحاد پارٹی (اے آئی پی) کے سربراہ اور شمالی کشمیر کے حلقہ انتخاب لنگیٹ سے آزاد رکن اسمبلی انجینئر شیخ عبدالرشید کو بدھ کے روز اُس وقت حراست میں لے لیا گیا جب انہوں نے کشمیر میں گذشتہ 11 روز کے دوران ہونے والی ہلاکتوں کے خلاف احتجاجی مارچ نکالنے کی کوشش کی۔ انجینئر رشید نے چند روز قبل اعلان کیا تھا کہ وہ کشمیریوں پر ہونے والی زیادتیوں اور حالیہ شہری ہلاکتوں کے خلاف 21 جولائی کو نئی دہلی میں پارلیمنٹ کے باہر احتجاج کریں گے ۔ تاہم رپورٹوں کے مطابق انہوں نے پارلیمنٹ کے باہر اپنے احتجاج کے پروگرام کو ملتوی کیا ہے ۔ ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کشمیر کی موجودہ امن و قانون کی صورتحال پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے 21 جولائی کو ڈل جھیل کے کناروں پر واقع شیر کشمیر انٹرنیشنل کنونشن سنٹر سری نگر میں کل جماعتی میٹنگ طلب کی ہے ۔  اے آئی پی کے ایک ترجمان نے کہا کہ کرفیو کے باوجود انجینئر رشید کی قیادت میں درجنوں پارٹی کارکنوں نے بدھ کی صبح ڈپٹی کمشنر آفس کپواڑہ کے باہر جمع ہوکر احتجاجی مارچ نکالا۔ انہوں نے کہا کہ احتجاجی مارچ کے شرکاء پر امن طور پر حالیہ شہری ہلاکتوں اور مقامی لوگوں پر ہونے والی زیادتیوں کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے آگے بڑھ رہے تھے ، لیکن پولیس نے شرکاء کا راستہ روکتے ہوئے سب کو گرفتار کرکے پولیس تھانہ کپواڑہ منتقل کیا۔ تاہم حراست میں لئے گئے اے آئی پی کارکنوں کو قریب ایک گھنٹے بعد رہا کیا گیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT