Sunday , July 22 2018
Home / ہندوستان / کشمیر میں یوم جمہوریہ تقاریب : کسی بھی ناگہانی واقعہ کے انسداد کیلئے تلاشی مہم

کشمیر میں یوم جمہوریہ تقاریب : کسی بھی ناگہانی واقعہ کے انسداد کیلئے تلاشی مہم

جنگجوؤں کے منصوبے کو ناکام بنانے فوج چوکس ،شوپیان تصادم میں زخمی شہری فوت
سرینگر۔ 16جنوری (سیاست ڈاٹ کام) جموں وکشمیر کی گرمائی درالحکومت سری نگر میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے پرامن انعقاد کو یقینی بنانے اور جنگجوؤں کے کسی بھی منصوبے کو ناکام بنانے کیلئے سیکورٹی فورسز نے گاڑیوں اور راہگیروں کی تلاشی لینے کا سلسلہ مزید وسیع اور تیز کردیا ہے ۔ سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس اہلکاروں کی جانب سے شہر اور اس کے مضافات میں مختلف مقامات پر ناکے بٹھائے گئے ہیں جہاں گاڑیوں ، مسافروں اور راہگیروں کی تلاشیاں لی جارہی ہیں۔ سری نگر کے سیول سکریٹریٹ سے 300 میٹر کی دوری پر واقع بڈشاہ پل پر پولیس نے ایک ناکہ بٹھایا ہے جہاں مضافات سے آنے والی گاڑیوں کی تلاشی لی جارہی ہے اور اِن میں سوار افراد کی جامہ تلاشی لینے کے علاوہ شناختی کارڈ چیک کئے جارہے ہیں۔ناکہ پر تعینات ایک پولیس اہلکار نے بتایا ‘ہمیں گاڑیوں کی چیکنگ کرنے کے احکامات ملے ہیں’۔ ایسے ہی ناکے سرینگر کے مضافات میں مختلف اضلاع کو سری نگر کے ساتھ جوڑنے والی سڑکوں پر بھی بٹھائے گئے ہیں جہاں گاڑیوں کی تلاشی لینے کے علاوہ راہگیروں سے پوچھ گچھ بھی کی جارہی ہے ۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ اگرچہ جنگجوؤں کی جانب سے حملوں کی منصوبہ بندی کے بارے میں کوئی مصدقہ اطلاع نہیں ہے تاہم سیکورٹی فورسز یوم جمہوریہ کی تقریبات کے پیش نظر کوئی چانس نہیں لینا چاہتے ہیں۔دریں اثناء جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں گذشتہ برس 19 دسمبر کو ایک مسلح تصادم کے دوران زخمی ہونے والا ایک شہری 27 دنوں تک موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد دم توڑ گیا ہے ۔ سرکاری ذرائع نے مہلوک شہری کی شناخت مولو چھتراگام کے رہنے والے محمد ایوب بٹ کے بطور کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ادھیڑ عمر کا ایوب بٹ بٹہ مرن وانپورہ میں 19 دسمبر 2017کو جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والے مسلح تصادم کے وران گولیاں لگنے سے زخمی ہوا تھا۔ محمد ایوب کے بدن میں تین گولیاں پیوست ہوئی تھیں۔ ذرائع نے بتایا کہ زخمی ایوب کو گولیاں لگنے کے بعد سری نگر کے اسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں اس کا قریب دو ہفتوں تک علاج جاری رہا۔ انہوں نے بتایا ‘اس کو گذشتہ ہفتے اسپتال سے اپنے گھر منتقل کیا گیا تھا۔ محمد ایوب کی گذشتہ رات حالت بگڑ گئی جس کے بعد اس کے افراد خانہ نے اسے سری نگر منتقل کرنے کی کوشش کی، تاہم وہ راستے میں ہی دم توڑ گیا’۔

TOPPOPULARRECENT