Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / کشمیر پر مستقل اور سخت پالیسی ضروری

کشمیر پر مستقل اور سخت پالیسی ضروری

سخت گیر حریت کانفرنس وفد کی پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط سے ملاقات
نئی دہلی ؍ سرینگر ۔ 14 ڈسمبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) سخت گیر حریت کانفرنس کے دو قائدین نے آج پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط سے نئی دہلی میں ملاقات کی اور اُن سے کہا کہ کشمیر پالیسی کے سلسلے میں اسلام آباد کو مستقل اور سخت  موقف اختیار کرنا چاہئے ۔ انھوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ پاکستان جموں و کشمیر میں حقوق انسانی کی خلاف ورزیوں کو بین الاقوامی فورم میں اُجاگر کرنے کے سلسلے میں سرگرم رول ادا کرے ۔ صدرنشین سید علی گیلانی کی جانب سے بھیجے گئے حریت وفد نے پاکستانی ہائی کمشنر سے تقریباً نصف گھنٹے تک تفصیلی بات چیت کی ۔ حریت ترجمان ایاز اکبر نے سرینگر میں ایک بیان میں کہاکہ وفد نے وزیر اُمور خارجہ سشما سوراج سے ہوئی حالیہ ملاقات کے بارے میں بھی تفصیلی تبادلۂ خیال کیا۔ اسلام آباد میں ایشیاء ہارٹ کانفرنس کے موقع پر پاکستانی حکام سے سشما سوراج کی ملاقات ہوئی تھی اور یہ موضوع بھی زیربحث آیا ۔ سشما سوراج کے وزیراعظم پاکستان نواز شریف اور دیگر قائدین سے ملاقات کے بعد ہی دونوں ممالک نے کشمیر کا احاطہ کرتے ہوئے دیگر باہمی مسائل پر جامع مذاکرات شروع کرنے کافیصلہ کیاہے۔ دو رکنی حریت وفد میں گیلانی کے پرسنل سکریٹری پیر سیف اﷲ اور چیف آرگنائزر الطاف احمد شاہ شامل تھے ۔ انھوں نے کہا کہ ڈپٹی ہائی کمشنر اور پاکستانی مشن کے دیگر عہدیدار بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ حریت وفد نے گیلانی کا یہ پیام حوالے کیا کہ پاکستان کو کشمیر پالیسی کے سلسلے میں استقلال اور سخت موقف اختیار کرنا ہوگا ۔ اس کے علاوہ وہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کو بین الاقوامی فورم میں اُجاگر کرنے کے معاملے میں سرگرم رول ادا کرے۔ وفد نے پاکستانی ہائی کمشنر کو کشمیر کی موجودہ صورتحال سے بھی واقف کرایا ۔

TOPPOPULARRECENT