Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / کشمیر پر وزیر اعظم نے خاموشی توڑی ‘ بحالی امن پر زور

کشمیر پر وزیر اعظم نے خاموشی توڑی ‘ بحالی امن پر زور

ریاست کے عوام کو اتنی ہی آزادی حاصل ہے جتنی آزادی ہر ہندوستانی کو حاصل ہے  ۔ مدھیہ پردیش میں جلسہ سے مودی کا خطاب

بھابرا ( مدھیہ پردیش ) 9 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) وادی کشمیر میں 32 دن سے جاری ہنگامہ آرائی پر اپنی خاموشی کو توڑتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے وادی  میں انسانیت ‘ جمہوریت اور کشمیریت کے جذبہ کے تحت امن کو بحال کرنے جمہوریت اور بات چیت کا راستہ اختیار کرنے کی وکالت کی ۔ مودی نے وادی کشمیر کے عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ یہ انتہائی تکلیف کی بات ہے کہ بے قصور نوجوانوں کے ہاتھ میں پتھر تھمادئے گئے ہیںجبکہ ان نوجوانوں کے ہاتھوں میں لیپ ٹاپ ‘ کتابیں اور کرکٹ کے بیاٹ ہونے چاہئیں۔ انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ اس جنت ارضی میں امن کو برقرار رکھیں اور ہم آہنگی کو یقینی بنائیں۔ ریاست میں اٹھنے والی آزادی کے حق کی آوازوں کا بالواسطہ حوالہ دیتے ہوئے

انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے عوام کو بھی اتنی ہی آزادی حاصل ہے جتنی ہر ہندوستانی کو حاصل ہے ۔ وادی میں حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی 8 جولائی کو ہلاکت کے بعد سے مسلسل جاری ہنگاموں اور کرفیو پر نریندر مودی نے پہلی مرتبہ تبصرہ کیا ہے ۔ وادی میں اب تک ہوئے تشدد اور جھڑپوں میں کم از کم 55 افراد ہلاک ہوگئے ہیں اور وادی کے بڑے حصوں میں ریکارڈ 32 دن سے کرفیو بھی جاری ہے ۔ مودی مدھیہ پردیش کے بھابرا میں ایک ریلی سے خظاب کر رہے تھے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ ریاست میں محبوبہ مفتی کی حکومت اور مرکزی حکومت ریاست کی مشکلات کو حل کرنے کی کوشش کر رہی ہیں لیکن کچھ لوگ جو اس کو ہضم کرنے تیار نہیں ہیں تباہی کا راستہ اختیار کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس وقت اٹل بہاری واجپائی وزیراعظز تھے انہوںنے انسانیت ‘ جمہوریت اور کشمیریت کا راستہ اختیار کیا تھا اور ہم بھی اسی راستے پر چل رہے ہیں۔ وہ کشمیر کے بھائیوں اور بہنوں سے یہ کہنا چاہتے ہیںکہ کشمیر کو بھی اتنی ہی طاقت حاصل ہے جتنی ہندوستان کے دوسرے حصوں کو ہمارے مجاہدین آزادی نے دی ہے ۔

کشمیر کو بھی اتنی ہی آزادی حاصل ہے جتنی ہر ہندوستانی محسوس کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج یہ احساس کرتے ہوئے تکلیف ہوتی ہے کہ معصوم نوجوانوں کے ہاتھ میں پتھر تھمادئے گئے ہیں۔ ہوسکتا ہے کہ اس سے کچھ لوگوں کی سیاست چمک رہی ہو لیکن ان سادہ نوجوانوں کا کیا ہوگا ۔ انسانیت اور کشمیریت کو متاثر ہونے کی اجازت نہیں دی جائیگی ۔ اس کیلئے جمہوریت اور بات چیت کا راستہ موجود ہے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ ریاستی حکومت ‘ جس میں بی جے پی بھی شامل ہے ‘ مرکزی حکومت کے ساتھ مل کر ریاست کی ترقی کیلئے کام کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت اس سلسلہ میں ہر ممکن اقدامات کریگی اس میں وکلا ‘ ڈاکٹرس ‘ سیاحت پر انحصار کرنے والوں اور سیب کی کاشت کرنے والوں کی ہر ممکن مدد کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کشمیر ملک کے عوام کیلئے جنت ہے ۔ ہر ہندوستانی کا کسی دن کشمیر کی سیاحت کرنے کا خواب ہوتا ہے ۔ لیکن ہم دیکھ رہے ہیں کہ کشمیر میں معمولی تعداد میں لوگ ‘ جو گمراہ ہیں اس عظیم روایت کو نقصان پہونچا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کا عام آدمی امن چاہتا ہے ۔ ان کی حکومت چاہتی ہے کہ کشمیر کو ترقی کی نئی بلندیوں پر لیجایا جائے ۔ وہاں کی پنچایتوں کو با اختیار بنایا جائے اور وہاں نوجوانوں کو روزگار فراہم کیا جائے ۔ وزیر اعظم نے کچھ لوگوں کے ناپاک عزائم کے باوجود امرناتھ یاترا کو یقینی بنانے پر مجبوبہ مفتی حکومتکی ستائش کی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ کشمیر کے نوجوانوں پر زور دیتے ہیں کہ کشمیر کو جنت ارضی برقرار رکھا جائے ۔ ہمیں اس خواب کے ساتھ آگے بڑھنے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT