Sunday , November 19 2017
Home / دنیا / کشمیر کبھی پاکستان کا حصہ نہیں ہوسکتا

کشمیر کبھی پاکستان کا حصہ نہیں ہوسکتا

نیوکلیئر ہتھیار مسئلے کے حل میں غیرمعاون ، مذاکرات کی راہ اختیار کرنے فاروق عبداﷲ کا مشورہ
لندن ۔ 19 سپٹمبر۔(سیاست ڈاٹ کام) نیشنل کانفرنس لیڈر اور سابق چیف منسٹر جموںو کشمیر فاروق عبداﷲ نے اس تاثر کو یکسر مسترد کردیا کہ نیوکلیئر جنگ کے خطرات کی بناء مسئلہ کشمیر کو حل کیا جائے گا ۔ انھوں نے کہاکہ یہ علاقہ کبھی بھی پاکستان کا حصہ نہیں ہوسکتا اور مذاکرات کے ذریعہ ہی پیشرفت کی جاسکتی ہے ۔ انھوں نے اعتراف کیا کہ جہاں تک ہندوستان اور پاکستان کے مابین باہمی روابط کا تعلق ہے کشمیر ہی مرکزی ایجنڈہ ہے ۔فاروق عبداﷲ نے کہاکہ دونوں ممالک کے مابین مذاکرات میں سب سے اہم پہلو یہ ہیکہ دونوں کسی نکتہ پر اتفاق رائے پیدا کریں۔ انھوں نے کہاکہ جنگ کے خطرات یا جنگ کی دھمکیاں یا جوہری بم کااستعمال یا پھر یہ کہنا کہ ہم نیوکلیئر ہتھیار کے حامل ہیں ، اس مسئلہ کو حل کرنے میں معاون نہیں ہوسکتا ۔ ہمیں اپنے مسائل حل کرنے کی راہ تلاش کرنی ہوگی خواہ ٹریک II یا ٹریک III کا راستہ اختیار کیاجائے ۔ ہمیں سب سے پہلے اُس مقام پر پہونچنا ہوگا جہاں اتفاق رائے ہو ۔ ایک بات بالکل واضح ہے کہ سرحدات کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا ۔ فاروق عبداﷲ آج یہاں ایک پروگرام سے مخاطب تھے جس کا عنوان ’’جموںوکشمیر پر ایک مکالمہ‘‘ تھا ۔ اس پروگرام میں سابق را سربراہ اے ایس دولات بھی شریک تھے جنھوں نے ایک کتاب ’’کشمیر : واجپائی دور ‘‘ کے عنوان سے تصنیف کی ہے ۔ اس پروگرام کے اینکر جرنلسٹ اشیش رائے تھے ۔ فاروق عبداﷲ نے کہاکہ پاکستان لاکھ کوشش کرلے وہ کشمیر کو حاصل نہیں کرسکتا ۔ اس کے باوجود ایسی کوشش کرتے ہوئے عوام کی تکالیف میں اضافہ کیوں کیا جارہا ہے ؟ ۔ اس حقیقت کو پیش نظر رکھنا چاہئے کہ اس طرف بھی مسلم آبادی موت کے منہہ میں جارہی ہے اور اُس طرف بھی مسلم آبادی ہی مررہی ہے ۔ وہ ہم پر بمباری کررہے ہیں اور ہم اُن پر بمباری کررہے ہیں نتیجہ میں صرف بے قصور لوگ مرر ہے ہیں ۔ آخر یہ سلسلہ کب تک چلتا رہے گا ؟ 65 سال ہوچکے ہیں ، اب اسے روکنا ہوگا ۔ انھوں نے کہاکہ ہندوستان اور پاکستان کو چاہئے کہ خدارا یہ سلسلہ روکیں، مل جل کر مسائل کو حل کریں ۔

TOPPOPULARRECENT