Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / کشمیر کی صورتحال بدستور اضطراب آمیز،عام زندگی مفلوج

کشمیر کی صورتحال بدستور اضطراب آمیز،عام زندگی مفلوج

سری نگر ، 17اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) وادی کشمیر کی صورتحال میں کوئی بڑی تبدیلی نہیں آرہی ہے جہاں پیر کو معمولات زندگی مسلسل 101 ویں روز بھی مفلوج رہے ۔وادی میں احتجاجی مظاہروں کی لہر پر بریک لگانے کے لئے تاحال قریب 10 ہزار افراد کو حراست میں لیا جاچکا ہے ۔ گذشتہ 101 دنوں کے دوران سیکورٹی فورسز کی کاروائی میں کم از کم 90 عام شہری ہلاک جبکہ ہزاردوں دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔دریں اثنا احتجاجی مظاہرین نے ہڑتال کی خلاف ورزی کرنے پر سری نگر بارہمولہ شاہراہ پر دو گاڑیوں کو نذر آتش کیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ احتجاجی مظاہرین کے ایک گروپ نے سری نگر کے مضافاتی علاقہ پارمپورہ میں دو چھوٹی مسافر گاڑیوں کو روک کر نذر آتش کیا۔انہوں نے بتایا کہ نذر آتش کئے جانے کے سبب گاڑیوں کو بھاری نقصان پہنچا ہے ۔ حال ہی میں نامعلوم افراد نے سری نگر ائرپورٹ روڑ پر دو گاڑیوں کو نذر آتش کیا تھا۔اگرچہ وادی میں پیر کو کسی بھی علاقہ میں کرفیو نافذ نہیں رہا، تاہم کچھ علاقوں میں لوگوں کو کسی ایک جگہ جمع ہونے سے روکنے کے لئے دفعہ 144کے تحت پابندیاں بدستور جاری رکھی گئی ہیں۔ پولیس نے بتایا کہ امن وامان کو بنائے رکھنے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کی تعیناتی بدستور جاری رکھی جائے گی۔تاہم لوگوں نے الزام عائد کیا کہ جنوبی کشمیر کے قصبہ جات و تحصیل ہیڈکوارٹروں میں آزادی حامی احتجاجوں اور ریلیوں کو روکنے کے لئے کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔ادھر سری نگر کے پائین شہر میں واقع تاریخی جامع مسجد کے باب الداخلے بدستور بند رکھے گئے ہیں۔ اس تاریخی جامع مسجد میں 9 جولائی کے بعد نماز جمعہ ادا کرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔

TOPPOPULARRECENT