Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / کشمیر کے مزید علاقوں میں کرفیو نافذ، حریت قائدین گرفتار

کشمیر کے مزید علاقوں میں کرفیو نافذ، حریت قائدین گرفتار

حکومت کی کشمیر پالیسی مکمل طور پر غلط: بی جے پی رکن پارلیمنٹ، وادیٔ چناب میں بند
سری نگر۔5 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وادی کشمیر کے نئے علاقوں میں بھی آج کرفیو کو توسیع دے دی گئی تاکہ علیحدگی پسندوں کے حضرت بل درگاہ تک جلوس نکالنے کے منصوبوں کو ناکام بنایا جاسکے۔ دریں اثناء آج مسلسل 29 ویں دن بھی وادی کشمیر میں معمولات زندگی معطل رہے۔ ایک پولیس عہدیدار نے کہا کہ چار یا زیادہ افراد کے وادیٔ کشمیر کے باقی حصوں میں اجتماع پر بھی احتیاطی اقدام کے طورپر پابندی عائد کی گئی ہے۔ حریت کانفرنس کے دونوں گروپس کے قائدین سخت گیر سید علی شاہ گیلانی اور اعتدال پسند میر واعظ عمر فاروق کو جلوس نکالنے کی کوشش کرتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا۔ اپنے گھر حیدرپورہ سے باہر نکلنے کی کوشش پر گیلانی کو حراست میں لے کر ہمشاوا پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا۔ میر واعظ عمر فاروق کو بھی ان کی نگین قیام گاہ سے باہر آنے پر گرفتار کرکے نگین پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا۔ دریں اثناء جموں سے موصولہ اطلاع کے بموجب جزوی طور پر اور مکمل طور پر بند وادیٔ چناب کے تین اضلاع کشت وار، دوڈا اور رام بن میں منایا گیا تاکہ وادیٔ کشمیر میں فوج کے ساتھ جھڑپوں میں ہلاک ہونے والے احتجاجیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا جاسکے۔ کشت وار اور دوڈا بشمول بھدروا، بنی ہال اور تاتری قصبوں میں بند مکمل تھا۔

احتجاجی کل رات سے ہی بعض قصبوں میں ہندوستان مخالف نعرہ بازی کررہے تھے اور فوج کے ساتھ جھڑپوں میں نوجوانوں کی ہلاکت کی مذمت کررہے تھے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب بی جے پی رکن پارلیمنٹ نے آج لوک سبھا میں مرکزی حکومت پر مسئلہ کشمیر سے نمٹنے کے سلسلہ میں تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کی حکمت عملی ’’مکمل طور پر غلط‘‘ ہے اور مطالبہ کیا کہ دہشت گردوں اور علیحدگی پسندوں سے سختی کے ساتھ نمٹا جانا چاہئے۔ سابق معتمد داخلہ آر کے سنگھ نے کہا کہ حکومت جموں و کشمیر کے وزیر نے حال ہی میں ایک بم حملہ پر تنقید کی تھی، بعض پولیس اسٹیشنوں اور چوکیوں کا حالیہ بے چینی کے دوران پولیس نے تخلیہ کردیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکمت عملی پوری طرح غلط ہے۔ مرکزی حکومت علیحدگی پسندوں اور بعض دہشت گردوں سے جس طرح نمٹ رہی ہے وہ مکمل طورپر غلط ہے۔ ان پر مقدمے چلائے جانے چاہئیں اور حوالہ کے ذریعہ رقموں کی آمد پر پابندی عائد کرنی چاہئیں۔

TOPPOPULARRECENT