Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / کشمیر ی سیب کے بعد اب تلنگانہ میں’آصفیہ سیب‘

کشمیر ی سیب کے بعد اب تلنگانہ میں’آصفیہ سیب‘

شہر سے 250کلومیٹر کے فاصلہ پر سیب کی پیداوار کا تجربہ تقریباً کامیاب
حیدرآباد۔13مارچ(سیاست نیوز) ہماچل‘ ڈلیشس‘ رائل ڈلیشس‘ رائل گالا ‘ واشنگٹن ریڈ‘ گولڈن ڈلیشس اور لال عنبری سیب کے بعد بہت جلد اب شہر کے بازاروں میں آصف آباد کی پیداوار’آصفیہ سیب‘ بھی دستیاب ہوگا۔ جی ہاں یہ حقیقت ہے کہ ریاست تلنگانہ کے آصف آباد کے کیرامیری موضع میں بالاجی نامی کسان نے 150سیب کے پودوں کی کاشت کو ممکن بنایا ہے اور ان میں 50درختوں پر پھول لگ چکے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق کسان نے محکمہ باغبانی کی جانب سے فراہم کردہ مفت شاخوں کو تجرباتی طور پر لگانا شروع کیا تھا اور اس کے مثبت نتائج برآمدہونے لگے ہیں ۔ تلنگانہ کے اس پہلے سیب کے باغ میںاندرون 45یوم پھل آنے کی امید ہے لیکن اس کے لئے حکومت کو اس باغ کی سمت توجہ مبذول کرنی ہوگی۔ بالاجی کا کہنا ہے کہ اس نے اب تک باغ کو راہداریوں سے پانی پہنچانے کے اقدامات کئے ہیں اور اگر اب حکومت کی جانب سے اس علاقہ میںڈرپ اریگیشن کی سہولت فراہم کی جاتی ہے تو اس کے مثبت نتائج برآمد ہونے کی قوی توقع ہے۔ محکمہ باغبانی کی جانب سے مفت فراہم کردہ ان پودوں کو بالاجی نے کیرامیری میں واقع اپنی اراضی میں بویا تھا اور اس علاقہ میں 30ڈگری سے کم درجہ حرارت کے سبب پیداوار ممکن ہونے کا امکان تھا اور اسی امکان کے پیش نظر کی گئی اس کوشش کو اس حد تک کامیابی مل چکی ہے کہ تلنگانہ کے ایک موضع میں سیب کی کاشت ممکن ہونے لگی ہے اور درختوں پر پھول نکل آئے ہیں ۔ بالاجی نے اس باغ کو کیمیائی کھاد سے پاک رکھنے کیلئے نامیاتی کھاد کا استعمال کیا ہے تاکہ اس پھل کی منفرد شناخت کو برقرار رکھا جا سکے۔ نامیاتی کھاد جسے حرف عام میں آرگینک کھاد کہا جاتا ہے کے استعمال کو ترجیح دیتے ہوئے بالاجی نے باغبانی کے لئے گائے کے گوبر کے ساتھ ایک لیٹر جیو امرتم کو 20لیٹر پانی میں ملا کر اسے چھڑکاؤ کیلئے استعمال کیا تاکہ اس فصل کو کیڑوں سے محفوظ رکھا جا سکے۔تلنگانہ کے ضلع آصف آباد (کمرم بھیم) کے علاقہ میں موجود پہاڑی علاقہ کیرامیری اور اطراف کے علاقوں میں موجود پہاڑی علاقوں کے کاشتکاروں میں بھی سیب کی پیداوار میں آرہی بہتری کو دیکھتے ہوئے سیب کی کاشت کا رجحان بڑھنے لگا ہے اور اس رجحان میں ہونے والے اضافہ کو حکومت کی حوصلہ افزائی کے ساتھ اگر انہیں ڈرپ اریگیشن کی سہولتیں فراہم کی جاتی ہیں تو ملک میں جموں و کشمیر ‘ ہماچل پردیش کے بعد تلنگانہ ایسی ریاست بن سکتی ہے جہاں سیب کی کاشت ممکن ہو پائے گی۔ کاشتکاروں کا کہنا ہے کہ اس علاقہ میں سیب کی کاشت کی صورت میں ایسی دیگر کئی قیمتی پھلوں کی پیداوارکی جا سکتی ہیں جو سرد مقامات پر ہی پیدا ہوتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT