Tuesday , January 23 2018
Home / سیاسیات / کشن گنج سے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے مخالف کو بی جے پی کا ٹکٹ

کشن گنج سے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے مخالف کو بی جے پی کا ٹکٹ

جیسوال کی امیدواری پر مسلمانوں میں تشویش ، سیکولر امیدوار کی تائید کا فیصلہ

جیسوال کی امیدواری پر مسلمانوں میں تشویش ، سیکولر امیدوار کی تائید کا فیصلہ
ڈگروا ۔ 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پورنیہ کمشنری بالخصوص کشن گنج پارلیمانی حلقہ میں جو کثیر مسلم آبادی والا علاقہ ہے، ایک عرصہ سے بی جے پی اور آر ایس ایس سمیت تمام فرقہ پرست قوتیں مسلم قیادت کے خاتمہ کیلئے سرگرم ہیں۔ 2009ء میں سیمانچل کے تمام حلقوں میں بی جے پی کی کامیابی کے باوجود چونکہ کشن گنج میں سیکولرازم کی کامیابی ہوئی تھی، اس لئے تفرقہ پسند تنظیموں کی طرف سے پچھلے 5 برسوں میں نفرت کے بیج بوئے جانے کے بعد اس مرتبہ کشن گنج حلقہ سے دلیپ جیسوال جیسے لیڈر کو ٹکٹ دیا گیا ہے تاکہ اس سیکولر حلقہ سے بھی مسلم قیادت کا خاتمہ کیا جاسکے۔ مسٹر جیسوال کا تخریبی کردار بہرحال تمام لوگوں پر عیاں ہے۔ وہ اے ایم یو کشن گنج کی مخالفت میں پیش پیش تھے اور متعدد موقعوں پر حلقہ کی فضاء کو مسموم بنانے کی سازشیں کی تھیں۔ عام خیال تھا کہ اس مرتبہ بی جے پی کسی مسلم لیڈر کو ٹکٹ دے کر اپنے اوپر لگنے والے فرقہ پرستی کے داغ کو دھونے کی کوشش کرے گی مگر ایسا نہیں ہوا جس پر کشن گنج کے مسلمانوں اور بالخصوص دانشوروں میں سخت تشویش پائی جاتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT