Thursday , December 13 2018

کمیونسٹ لیڈر گویند پنسارے اور اہلیہ پر جان لیوا حملہ

کولہا پور (مہاراشٹرا) ۔ 16 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) روڈ ٹول ٹیکس کے خلاف مہم میں سرگرم عمل سینئر کمیونسٹ لیڈر گویند پنسارے اور ان کی اہلیہ کو آج ان کے مکان کے قریب موٹر سیکل پر سوار حملہ آوروں نے گولی ماردی۔ اس واقعہ پر ہر گوشہ سے مذمت کی جارہی ہے ۔ چیف منسٹر دیویندر فڈنویس اور این سی پی سربراہ شرد پوار نے سب سے پہلے پنسارے پر حملہ کی مذمت کی جوکہ کولہا پور میں حالیہ چنگی مخالف مہم (اینٹی ٹول کمپنین) میں پیش پیش تھے نامعلوم حملہ آوروں نے پنسارے اور ان کی اہلیہ پر آج صبح آئیڈیل ہاؤزنگ سوسائٹی کے باہر اس وقت فائرنگ کردی جب وہ شیوا جی یویندر سٹی سے چہل قدمی کے بعد واپس آرہے تھے ۔ پنسارے کو گردن اور ہاتھ میں دو گولیاں لگی ہیں جبکہ ان کی اہلیہ ساؤ اوما پنسارے کو صرف ایک گولی لگی ہے ۔ ایس پی ضلع کولہا پور مسٹر اوم پرکاش شرما نے یہ اطلاع دی۔ فائرنگ میں شدید زخمی اس جوڑے کو آستر آدھار ہاسپٹل میں شریک کروایا گیا جہاں پر پنسارے کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے اور ان کی اہلیہ خطرہ سے باہر ہے ۔ اس واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے شرد پوار نے کہا کہ مہاراشٹرا جیسی ترقی پسند ریاست کیلئے یہ تشویشناک ہے جبکہ چیف منسٹر فڈنویس نے بتایا کہ مجرموں کو پکڑنے کیلئے پولیس کی 10 خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔ این سی پی لوک سبھا مہم سپریہ سولے نے کہا کہ اس طرح کے بزدلانہ حملوں کی روک تھام کیلئے حکومت سخت کارروائی کرے ۔ شیوسینا صدر اودے ٹھاکرے نے بھی چیف منسٹر سے رابطہ قائم کر کے حملہ آوروں کا پتہ چلانے کا مطالبہ کیا ۔ مہاراشٹرا اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر رادھا کرشنا وکی پاٹل نے کہا کہ ریاستی پولیس سربراہ (ڈی جی پی) کو برطرف کردیا جائے جو کہ امن و قانون کی صورتحال نمٹنے کے اہل نہیں ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT