Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کنٹراکٹرس سے ٹنڈرس کی عدم وصولی ، مزید ایک ٹنڈر اجرائی پر غور

کنٹراکٹرس سے ٹنڈرس کی عدم وصولی ، مزید ایک ٹنڈر اجرائی پر غور

چھت درستگی میں بلدیہ اور محکمہ عمارات و شوارع کی خدمات سے مزید نقصان کا شکار
حیدرآباد۔17اگسٹ (سیاست نیوز) تاریخی مکہ مسجد کے مرمتی کاموں کے لئے دو مرتبہ طلب کردہ ٹنڈر پر کسی کنٹراکٹر نے ٹنڈر داخل نہیں کیا ہے اور محکمہ آثار قدیمہ کی جانب سے بہت جلد ایک اور مرتبہ ٹنڈر طلب کئے جانے کا امکان ہے۔ بتایا جاتاہے کہ قومی سطح پر ٹنڈر طلب کئے جانے کے باوجود مکہ مسجد کے مرمتی کاموں کیلئے ٹنڈر موصول نہ ہونے کی بنیادی وجہ ان کاموں کیلئے مختص کیا گیا بجٹ ہے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق اب تک مکہ مسجد کی مرکزی عمارت کی چھت کو ٹپکنے سے بچانے کیلئے بلدیہ و دیگر اداروں جیسے عمارات و شوارع کے کنٹراکٹرس کی خدمات حاصل کی گئی تھیں جنہوں نے عمارت کے تحفظ کے بجائے عمارت کی چھت پر اضافی بوجھ عائد کرتے ہوئے اسے نقصان پہنچایا ہے۔ محکمہ آثار قدیمہ کے عہدیدار نے نام کا افشاء نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ جو بجٹ مختص کیا گیا ہے اس میں صرف چھت کو بہتر بنانا بھی مشکل ہے کیونکہ تاریخی عمارت کو اس کی اصلی شکل میں لانے کے لئے کافی محفوظ طریقہ کار اختیار کرنے کی ضرورت ہوتی ہے ۔ محکمہ آثار قدیمہ کا کہنا ہے کہ مکہ مسجد کی تعمیر میں جن اشیاء کا استعمال کیا گیا ہے ان اشیاء کی جانچ کے بعد ان ہی اشیاء کے استعمال کے ذریعہ مرمت کو ممکن بنایا جانا ناگزیر ہے کیونکہ ایسا نہ کرنے کی صورت میں عمارت کی تاریخی اہمیت متاثر ہوگی۔ مکہ مسجد کی مرکزی عمارت کی دیواروں سے پانی رسنے کی شکایات اور مناظر کے باوجود حکومت اور محکمہ آثار قدیمہ کی خاموشی کے متعلق عہدیداروں نے واضح کیا کہ نہ صرف مکہ مسجد بلکہ مسجد کے صحن میں موجود آصف جاہی سلاطین کے مقبروں کے علاوہ مدرسہ حفاظ اور آثار مبارک کے گوشہ کی بھی حالت انتہائی خستہ ہو چکی ہے۔ عہدیدار نے بتایا کہ محکمہ کی جانب سے کنٹراکٹر س کو راغب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے لیکن اس کے باوجود انہیں ناکامی کی بنیادی وجہ کاموں کا کم تخمینہ ہے جو کہ عمارت کی حقیقی شکل میں واپسی کیلئے درکار ہے۔

TOPPOPULARRECENT